گلگت بلتستان کی زمین غیرمقامی افراد کو بیچنے پر خالد بلتستانی کو تشویش

شیئر کریں:

گلگت بلتستان ویلفیئر سوسائٹی کے چیئرمین خالد بلتستانی نے گلگت بلتستان کا دورہ کیا۔ اس دورہ میں
انہوں نے اسپیکر جی بی اسمبلی سید امجد حسین زیدی اور دیگر اراکین اسمبلی سے ملاقاتیں کیں۔

خالد بلتستانی نے امریکا میں مقیم علاقے کی برادری میں گلگت بلتستان کی زمین کی تیزی سے فروخت
کیے جانے پر تشویش سے آگاہ کیا۔
پاکستان اور دنیا بھر سے سیاحوں کی آمدورفت میں اضافے کے بعد گلگت بلتستان میں دیگر صوبوں کے
سرمایہ کاروں نے زمینیں خریدنی شروع کر دی ہیں۔

غیرمقامی افراد کو زمین کی فروخت سے وقتی طورپر مقامی لوگوں کے پاس پیسہ تو آجائے گا لیکن
مستقبل میں ان کی اگلی نسلوں کو پریشانی کا سامنا کرنا پڑے گا۔

خالد بلتستانی نے اس سنجیدہ مسئلہ پر اسمبلی میں آواز اٹھانے کی ضرورت پر زور دیا۔ انہوں نے اسپیکر
کو بتایا کہ آزاد کشمیر میں کوئی بھی غیرمقامی شخص زمین نہیں خرید سکتا بالکل اسی طرح گلگت بلتستان
میں بھی کسی کو اجازت نہیں دینی چاہیے۔ کیونکہ یہ مقامی ثقافت پر بھی کاری ضرب ہے۔

باالخصوص گلگت شہر میں باہر کے لوگوں کے آنے کے بعد سے حالات خراب رہے ہیں۔اب بلتستان میں
بھی پیسوں کی چمک نے مقامی افراد کی آنکھوں پر پٹیاں باندھ دی ہیں اور وہ دھڑا دھڑ اپنی قیمتیں زمینیں
کوڑیوں کے داموں بیچے جارہے ہیں۔

خالد بلتستانی نے اسپیکر کو بتایا کہ امریکا میں آباد گلگت بلتستان کے عوام اپنے خطے میں سرمایہ کاری
کے لیے تیار ہیں۔ ہمیں مواقع فراہم کیے جائیں اس سے علاقے میں خوشحالی آئے گی اور لوگوں کو
روزگار کے بہتر مواقع بھی میسر آئیں گے۔

خالد بلتستانی نے اسپیکر کو امریکا کے دورہ کی دعوت بھی دی جسے اسپیکر نے قبول کر لیا۔ اسپیکر نے
خالد بلتستانی کی تشویش کو غور سے سنا اور اس مسئلہ کو اسمبلی اٹھانے کے لیے پارٹی رہنماؤں کے
ساتھ مشاورت کرنے کی یقین دہانی بھی کرائی۔

گلگت بلتستان ویلفیئر سوسائٹی کے چیئرمیں خالد بلتستانی نے اپنے ایک ہفتہ کے دورہ میں گلگت بلتستان
سمیت خنجراب اور پاک چائنا سرحد کا دورہ بھی کیا۔ انہوں نے سیاحت کے فروغ میں اپنا اور امریکا
میں مقیم گلگت بلتستان کے عوام کی جانب سے کردار ادا کرنے کی یقین دہانی بھی کروائی۔


شیئر کریں: