گلگت بلتستان انتخابات کے غیرسرکاری مکمل نتائج کی تفصیلات جانیے

شیئر کریں:

گلگت بلتستان اسمبلی کے انتخابات میں ایک بار وہی جماعت حکومت بنانے جارہی ہے جن
کی اسلام آباد میں حکومت ہوتی ہے۔
پہلے انتخاب میں پیپلز پارٹٰی، دوسرے میں مسلم لیگ ن اور اب تیسرے انتخابات میں تحریک
انصاف حکومت بنارہی ہے۔

اب تک کے موصول نتائج سے معلوم ہوا ہے کہ تحریک انصاف 9 نشستوں کے ساتھ پہلے، آزاد
امیدوار 7 نشستوں کے ساتھ دوسرے، پیپلز پارٹی 4 کے ساتھ تیسرے، مسلم لیگ 2 اور مجلس
وحدت المسلمین ایک نشست حاصل کر سکی۔

گلگت بلتستان میں تحریک انصاف کے حکومت بنانے کا امکان روشن

حکومت سازی میں آزاد امیدواروں کو خاص اہمیت حاصل رہے گی اور کہا یہی جارہا ہے کہ
ان میں سے اکثر پی ٹی آئی میں شامل ہو جائیں گے۔
گلگت بلتستان کے حلقوں کے نتائج کچھ اس طرح ہیں۔

جی بی اے 1
پیپلز پارٹی کے امجد حسین 11178 ووٹ لے کر واضح لیڈ سے کامیاب ہوئے۔
یہاں سے آزاد امیدوار سلطان رئیس نے 8356 ووٹ لیے اور تحریک انصاف کے جوہر علی صرف 403 ووٹ لے سکے۔
جی بی اے 2
پیپلز پارٹی کے جمیل احمد نے 6848 ووٹ لے کر کامیابی سمیٹی، پی ٹی آئی کے فتح اللہ خان 6229 اور مسلم
لیگ (ن) کے حفیظ الرحمان صرف 2100 ووٹ ہی لے سکے۔
جی بی اے 3
(پی ٹی آئی کے امیدوار جعفر شاہ کے انتقال کی وجہ سے الیکشن نہیں ہو سکا یہاں انتخاب 22 نومبر کو ہو گا)
جی بی اے 4
پیپلز پارٹی کے امجد حسین کا یہاں اسلامی تحریک پاکستان کے محمد ایوب سے مقابلہ تھا۔ امجد حسین
4716 ووٹ لے کر کامیاب ہوئے اور اسلامی تحریک پاکستان کے محمد ایوب دوسرے نمبر پر رہے۔
انہوں نے 4291 ووٹ لیے اور تحریک انصاف کے ذوالفقار میر صرف 2200 ووٹ ہی لے سکے۔
جی بی اے 5
آزاد امیدوار جاوید علی منوا 2443 ووٹ لے کے کامیاب ہوئے
ایم ڈبلیو ایم کے رضوان علی 1766 اور آزاد امیدوار ذوالفقار علی مراد نے 1230 ووٹ لیے۔

جی بی اے 6
تحریک انصاف کے کرنل (ر) عبیداللہ بیگ 6600 ووٹ لے کر کامیاب ہوئے۔ آزاد امیدوار نور محمد 4584 اور پی پی پی کے ظہور کریم ایڈووکیٹ 3005 ووٹ کے ساتھ دوسرے اور تیسرے نمبر پر رہے۔

جی بی اے 7
پی ٹی آئی کے راجہ محمد زکریا خان نے 5290 ووٹ لے کر مہدی شاہ کو شکست دی۔
پی پی پی کے سابق وزیر اعلی سید مہدی شاہ نے 4114 اور ن لیگ کے محمد اکبر خان نے 818 ووٹ لیے۔
جی بی اے 8
مجلس وحدت مسلمین کے محمد کاظم 7534 ووٹ لے کر کامیاب ہوئے اور پیپلز پارٹی کے سید محمد علی شاہ 7146 ووٹ لے سکے۔

جی بی اے 9
آزاد امیدوار وزیر محمد سلیم نے 6286 ووٹ لے کر تحریک انصاف کے فدا محمد نشاد کو شکست دی۔
فدا نشاد 5187 ووٹ لے سکے اور پی پی پی کے وزیر وقار علی کو 1856 ووٹ ملے۔

جی بی اے 10
آزاد امیدوار راجا ناصر علی خان 4667 ووٹ لے کر کامیاب ہوئے یہاں تحریک انصاف کے وزیر حسین 3344 ووٹ لے سکے۔

جی بی اے 11
پی ٹی آئی کے سید امجد علی 5733 ووٹ کے ساتھ کامیاب ہوئے اور آزاد امیدوار سید محسن رضوی 2016 ووٹ کے ساتھ دوسرے نمبر رہے۔

جی بی اے 12
پی ٹی آئی کے راجا محمد اعظم خان 10674 ووٹ لے کر کامیاب ہوئے۔
پیپلز پارٹی کے عمران ندیم 8886 اور مسلم لیگ (ن) کے محمد طاہر شگری 2261 ووٹ لے سکے۔

جی بی اے 13
تحریک انصاف کے خالد خورشید خان 4836 ووٹ لے کر کامیاب ہو گئے، پیپلز پارٹی کے عبدالحمید خان 3117 اور ن لیگ کے رانا فرمان علی 2192 ووٹ لے سکے۔

جی بی اے 14
تحریک انصاف کے شمس الحق نون نے 5354 ووٹ سے فتح سمیٹھی اور پیپلز پارٹی کے مظفر علی 3479 ووٹ سمیٹ سکے۔

جی بی اے 15
آزاد امیدوار شاہ بیگ 2713 ووٹ لے کے کامیاب ہوئے، دوسرے آزاد امیدوار محمد دل پذیر نے 2309 اور تحریک انصاف کے نوشاد عالم نے صرف 183 ووٹ لیے۔
جی بی اے 16
مسلم لیگ (ن) کے امیدوار محمد انور 4813 ووٹ لے کر کامیاب ہوئے،
آزاد امیدوار عطا اللہ 2576 اور تحریک انصاف کے عتیق اللہ صرف 1733 ووٹ لے سکے۔

جی بی اے 17
تحریک انصاف کے حیدر خان 5389 ووٹ کے ساتھ کامیاب ہوئے، جے یو آئی (ف) کے رحمت خالق 5162 اور پی پی کے غفار خان صرف 423 ووٹ لینے میں کامیاب ہوئے۔
جی بی اے 18
تحریک انصاف کے گلبر خان نے 6793 ووٹ لے کر فاتح ٹہرے اور
آزاد امیدوار ملک کفایت الرحمان نے 5986 ووٹ لیے۔

جی بی اے 19
آزاد امیدوار نواز خان ناجی 6208 ووٹ لے کر کامیاب ہوئے، پیپلز پارٹی کے جلال علی شاہ 4967 ووٹ اور تحریک انصاف کے ظفر محمد نے 3 ہزار ووٹ حاصل کیے۔

جی بی اے 20
تحریک انصاف کے نذیر احمد 5582 ووٹ کے ساتھ فتح حاصل کی،
مسلم لیگ (ن) کے خان اکبر خان نے 3815 اور پی پی کے علی مدد شیر نے 1026 ووٹ لیے۔

جی بی اے21
مسلم لیگ (ن) کے امیدوار غلام محمد نے 4334 ووٹ لے کر کامیابی سمیٹھی اور پیپلزپارٹی کے امیدوار محمد ایوب شاہ 3430 ووٹ حاصل کر سکے۔

جی بی اے 22
آزاد امیدوار مشتاق حسین نے 6051 ووٹ لے کر کامیاب ہوئے، تحریک انصاف کے محمد ابراہیم ثنائی نے 4945 اور پیپلز پارٹی کے محمد جعفر نے 2615 ووٹ لیے۔

جی بی اے 23
آزاد امیدوار عبدالحمید 3666 ووٹ لے کر کامیاب ہوئے، تحریک انصاف کی آمنہ بی بی 3296 اور پیپلز پارٹی کے غلام علی حیدری نے صرف 301 ووٹ لیے۔
اور
جی بی اے 24
پیپلز پارٹی کے محمد اسماعیل 6206 ووٹ لے کر کامیاب ہوئے، تحریک انصاف کے سید شمس الدین 5361 اور مسلم لیگ (ن) کے محمد ابراہیم تبسم صرف ایک ووٹ حاصل کر سکے۔

کیا پی ٹی آئی نے الیکٹیبلز کی شکست کی بساط خود بچھائی ؟

خیال رہے یہ نتائج غیر سرکاری اور غیر حتمی ہیں یہ آزاد زرائع سے حاصل کیے گئے ہیں ان میں کچھ کمی بیشی ہو سکتی ہے۔
حتمی نتائج کا اعلان گلگت بلتستان کا الیکشن کمیشن کرے گا۔


شیئر کریں: