گجرات کے تین اور نوجوان انسانی اسمگلرز کے ہاتھوں ہلاک

شیئر کریں:

گجرات کے تین اور نوجوان یورپ جانے کی کوشش میں اپنی زندگیاں گنواں بیٹھے۔
ترکی میں غیرقانونی طریقے سے کشتی کے ذریعہ یورپ میں داخل ہونے سے پہلے ہی سمندر میں ڈوب گئے۔
یوپ کی چمک اور یورو میں کھیلنے کے شوق نے تین گھر اور اجاڑ دیے۔

وزیر آباد کا ایک اور جوان یورپ کی نظر

گاؤں عادو وال کے نوجوان سیدعلی شاہ، محسن اور رحمان اشرف ترکی میں کشتی ڈوبنے سے جاں بحق ہوگئے۔
سنہرے مستقبل کے خواب تینوں نوجوانوں کے ساتھ پانی میں بہہ گئے۔
پاکستان خبر پہنچتے ہی تینوں گھرانوں میں صف ماتم بچھ گئی۔
گجرات میں انسانی اسمگلنگ کا مکروہ دھندہ مزید زور پکڑتا جارہا ہے۔

سیکڑوں افراد کی اسمگلنگ میں ملوث ملزم گرفتار

اس سے پہلے بھی متعدد نوجوان غیرقانونی طریقے سے یورپ جانے کی کوشش میں ہلاک ہو چکے ہیں۔
ذرائع کے مطابق تینوں نوجوانوں نے اسمگلرز کو لاکھوں روپے دیے تھے۔
نوجوانوں کو پہلے کراچی لے جایا گیا جہاں سے بلوچستان کے دشوار گزار راستوں سے تفتان بارڈر کراس کرایا گیا۔

غیرقانونی طور پر یونان جاتےہوئے10پاکستانی جاں بحق 25 زخمی

اس دوران نوجوانوں کو انتہائی خطروں میں ڈال کر پہاڑوں، صحرا اور جنگلوں سے پیدل سفر کرایا گیا۔
انہیں کشتی میں ترکی لے جایا جارہا تھا کہ زائد افراد سوار ہونے کی وجہ سے حادثہ پیش آگیا۔
گجرات اور منڈی بہاؤالدین سے بڑی تعداد میں نوجوان یورپ جانے کی کوشش کرتے رہتے ہیں۔

اسپین میں منڈی بہاؤالدین کے 4افراد ہلاک 2 شدید زخمی


شیئر کریں: