گاؤں کی بجلی بند کرکے رات میں الیکٹریشن کی لڑکی سے ملاقاتیں

شیئر کریں:

اپنی محبوبہ سے ملنے کے لیے محبوب ہر طرح کا خطرہ مول لینے سے نہیں ڈرتا اور یار کی ایک جھلک دیکھنے کےلیے اپنی زندگی بھی داؤ پر لگادیتا ہے۔ ایسا ہی کچھ بھارت کی ریاست بہار میں ایک نوجوان بار بار کرتا رہا۔ ہوا کچھ یوں کہ پٹنہ کا ایک نوجوان اپنی محبوبہ سے ملنے کے لیے روزآنہ علاقے کی بجلی بند کر دیا کرتا تھا تاکہ تاریکی کا فائدہ اٹھاتے ہوئے باآسانی ملاقات ممکن ہو سکے۔
مشرقی ضلع پرنیہ کے گاؤں گنیش پور کی آئے روز رات میں بجلی غئاب ہوجایا کرتی تھی اہل علاقہ نے بارہا شکایت بھی کی لیکن بجلی فراہم کرنے والے ادارہ کے سرپر کوئی جوں نہیں رینگی اور ان کا یہی کہنا ہوتا کہ لائن میں کوئی فالٹ نہیں۔
گاؤں والوں اور محکمہ بجلی نے جب تفتیش کی تو ان کی حیرانی کا عالم نہ تھا کہ علاقہ میں تعینات الیکٹریشن ہی بجلی بند کرنے کا زمہ دار نکلا۔ روزآنہ رات میں دو سے تین گھنٹے کے لیے بجلی بند کی جاتی جب سب گھروں میں ہوتے اور محبوبہ سے ملاقات اور اس کے ساتھ خوشگوار وقت گزارنے کے بعد جب گاؤں سے نکل جاتا تو بجلی بحال ہوجایا کرتی تھی۔
ایک دن گاؤں والوں نے وقت نوٹ کر کے بجلی جانے کا انتظار کیا اور پھر رنگے ہاتھوں ایک سرکاری اسکول میں دونوں کو پکڑ لیا۔ الیکٹریشن نے اعتراف جرم بھی کر لیا جب بھی اسے ملاقات کی خواہش ہوتی وہ بجلی بند کردیا کرتا تھا۔
گاؤں والوں نے اس الیکٹریشن پر تشدد کیا اور سرمنڈواکے پورے گاؤں کا چکر لگوایا۔ بعد میں سرپنچ نے دونوں کی شادی بھی کرادی۔ شادی کے بعد علاقے میں کبھی بجلی کی بندش نہیں ہوئی۔ اس طرح دونوں اب ساتھ رہنے لگے۔ گاؤں والوں اور بجلی فراہم کرنے والے ادارے کی مشکل بھی ختم ہو گئی۔
بہار میں اپنی نوعیت کا یہ پہلا واقعہ تھا جس نے پورے گاؤں کو کافی عرصہ تک پریشان کیے رکھا تاہم اب سکون سے بجلی کے ساتھ زندگی گزار رہے ہیں۔


شیئر کریں: