کورونا کے دوران کیئر ہومز میں انتہائی درد ناک موتیں

شیئر کریں:

کورونا وائرس کے دوران کیئر ہومز میں بزرگوں کے ساتھ انتہائی نارواسلوک اپنایا گیا۔
کینڈا کے صوبے اونٹاریو کے پانچ کیئر ہومز میں اموات کی تحقیقات مکمل کر لی گئی ہیں۔
تحقیقات میں بتایا گیا ہے کہ جب کورونا وائرس کئیر ہومز میں آیا تو عملے نے بزرگوں کی دیکھ بھال ہی نہیں کی۔
کیئر ہومز کے عملے نے بزرگوں کو مرنے کے لیے تنہا چھوڑ دیا۔
سہولیات نہ ہونے پر بزرگوں نے رو رو کر زندگی کی بازیاں ہاریں۔
کینڈین فوج کی تحقیقات کے مطابق کورونا وائرس کے دوران عملہ نے کیئر ہومز پر بلکل توجہ نہیں دی۔
بزرگ شہریوں کو دیا جانے والا کھانا بھی باسی ہوتا تھا۔
کینیڈا کے وازیر اعظم کی اہلیہ کورونا سے صحتیاب
صفائی کے انتظامات بھی انتہائی ناقص تھے، جگہ جگہ گندگی اور کاکروچ نے بیماری پھیلانے میں اہم کردار ادا کیا۔
آرمی کی طرف سے کی گئی تحقیقات میں مزید کہا گیا ہے کہ بزرگ شہری بے بسی کے عالم میں عملے
کو مدد کے لیے پکارتے رہتے لیکن ان کی مدد کو کوئی نہیں آتا۔
کینیڈا نے امریکا کے ساتھ سرحد بند کردی
بیشتر بزرگوں نے رو رو کر انتہائی دردناک موت کو گلے لگایا۔
تحقیقاتی رپورٹ پر کینڈا کے وزیراعظم جسٹن ٹروڈو نے افسوس کا اظہار کیا ہے۔
کورونا وائرس سے کینڈا میں 80 فیصد ہلاکتیں کیئر ہومز میں ہوئی ہیں۔


شیئر کریں: