کورونا کی وجہ سے لندن کی سیاحت کو10ارب پاونڈ کا نقصان

شیئر کریں:

لندن کےمیئر صادق خان نے حکومت کو خبردار کیا ہے کہ کورونا وائرس بحران کے نتیجے میں سیاحوں کے
اخراجات میں کمی سے لندن 10.9 بلین پاؤنڈ سے محروم رہ جائے گا

کیونکہ دارالحکومت میں سیاحوں کی تعداد وبائی بیماری سے پہلے کی سطح سے بہت کم ہے۔
ان کا کہنا ہے کہبیرون ملک مقیم سیاح اس سال لندن میں شاپنگ اور سیاحت پر 7.4 بلین پاؤنڈ
کم خرچ کریں گے
ملکی سیاح 2020 کے آخر تک معمول کی سطح سے تقریباً3.5 بلین پاؤنڈز کم خرچ کریں گے۔
لندن کے میئر نے کہا کہ اعداد و شمار سے ظاہر ہوا ہے کہ کل چانسلر کے
اعلان کردہ تازہ بیل آؤٹ اور سرکاری امدادی پیکیج اس کا مؤثر حل نہیں۔
انہوں نے خبردار کیا کہ لندن کی سیاحت کا خاتمہ دارالحکومت میں کاروبار
کو آنے والے کئی مہینوں تک معمول پر آنے کی امید کے بغیر چھوڑ دے گا۔

میئر لندن نے کہا اس تجزیے سے دارالحکومت کے معاشی اور ثقافتی دل میں
بین الاقوامی سیاحوں کے ذریعہ خرچ کی جانے والی رقم میں کمی کا پتہ چلتا ہے –

جو شہر کے وسط میں ہر روز سفر کرنے والے کم مسافروں کے اثرات سے کہیں زیادہ ہے.
“واضح طور پر ، اس کا مطلب یہ ہے کہ بہت سے کاروبار بند ہونے
اور ہزاروں ملازمتوں کے چھوٹ جانے کا خطرہ ہے ڈیٹا کمپنی اسپرنگ بورڈ کے مطابق
لاک ڈاؤن کے دوران ، 17 اکتوبر کو ختم ہونے والے ہفتے میں
لندن کی دوکانوں میں گاہکوں کی تعداد میں 2.3 فیصد کی کمی واقع ہوئی ہے۔


شیئر کریں: