March 26, 2020 at 11:56 am

(پاکپتن سے محمود احمد رضا)

دنیا بھر میں کورونا وائرس سے 21 ہزار سے زائد اموات ہو چکیں اور 4 لاکھ 71 ہزار متاثر ہیں۔
پاکستان میں بھی ایک ہزار سے زائد افراد اس مہلک وائرس سے متاثر ہو چکے ہیں اور 7 اموات بھی ہوچکیں لیکن اب بھی ہمارے لوگ سماجی تقریبات سے باز نہیں آرہے ہیں۔


اس صورت حال میں بھی شادی بیاہ کی تقریبات میں عزیز و اقارب کو جمع کیا جارہا ہے۔
ایسی ہی ایک اور تقریب پنجاب کے شہر پاکپتن میں منعقد کی گئی ہے۔
پولیس نے پاکپتن کے نواحی گاؤں میں چھاپہ مار کے دولہا سمیت کئی باراتی حراست میں لے لیے۔
نواحی گاؤں 27 کے بی میں ایک گھر میں شادی کا فنکشن جاری تھا۔

مزید پڑھیے: https://bit.ly/3alnk4kشیخوپورہ میں کورونا کی خلاف ورزی پر دلہا اور باراتی گرفتار

پولیس نے قانون کی خلاف ورزی کرنے والے گھر پر چھاپ مارا جہاں شادی کی تقریب جاری تھی۔
پولیس نے 25 سالہ دولہا تنویر، ان کے والد اور چچا سمیت متعدد افراد کو گرفتار کر لیا۔
بارات کہروڑ پکا سے آئی ہوئی تھی جیسے ہی کھانا شروع ہوا پولیس پہنچ گئی۔
کہتے ہیں دولہا راجہ تنویر احمد قوت سماعت اور گویائی سے محروم ہیں۔
پولیس جاتے ہوئے کھانے کی کھانے کی دیگیں بھی ساتھ لے گئی لیکن باراتی فرار ہونے میں کامیاب ہو گئے۔
گرفتار افراد کے خلاف دفعہ 144 کی خلاف ورزی کرنے پر پولیس نے مقدمہ درج کرلیا ہے۔

پنجاب کے بیشتر علاقوں میں انتظامیہ کی جانب سے پابندی کے باوجود اجتماعی تقریبات منعقد کی جارہی ہیں۔

مزید پڑھیے:کورونا وائرس کا خوف پولیس کی آمد پر دلہا کو ساتھیوں نے اکیلا چھوڑ دیا

خیال رہے کورونا وائرس لوگوں کے میل میلاپ کی وجہ سے تیزی سے پھیلتا ہے اسی لیے حکومت نے عارضی طور پر تقریبات پر پابندی عائد کر رکھی ہے۔

دنیا بھر میں لاک ڈاون کرنے کی بنیادی وجہ بھی یہی ہے کہ لوگ گھروں میں محدود رہیں۔
کورونا وائرس کو مارنے کے لیے ضروری ہے کہ ہم اپنی سرگرمیاں محدود کردیں۔

Facebook Comments