کورونا ویکسن بنی نہیں 9 ارب ڈوز فروخت ہوگئیں، بھارت نے ڈیڑھ ارب ڈوز کا سودا کرلیا

شیئر کریں:

کورونا کی ویکسین ابھی فروخت کے لیے مارکیٹ میں نہیں آسکی لیکن اس سے پہلے ہی ساڑھے
نو ارب ڈوز کے سودے ہو بھی گئے۔
بھارت نے سب سے زیادہ ایک ارب ساٹھ کروڑ ڈوز خریدنے کے سودے کیے۔
دنیا بھر میں متعدد کمپنیاں اور ادارے کورونا کی ویکسین کی تیاری میں مصروف ہیں۔

ابھی تک کسی بھی کمپنی کی ویکسین کی متعلقہ اداروں سے منظوری نہیں ہوئی تاہم 17 کے قریب کمپنیوں
نے مختلف ممالک کو مجموعی طور پر 9 ارب 60 کروڑ ڈوزز کی فراہمی کے معاہدے کر لیے ہیں۔

ڈاؤ یونی ورسٹی نے کورونا وائرس دوا کی تیاری اہم مرحلے میں داخل

ان میں سے 6 ارب 40 کروڑ ڈوزز کی فراہمی کا معاہدے کنفرم ہو چکے ہیں اور 3 ارب 20 کروڑ دوزز کی
فراہمی کے معاہدوں کر بات چیت جاری ہے۔

رپورٹ کے مطابق بھارت نے اکسفورڈ سے 50 کروڑ ڈوزز، امریکی کمپنی نوواوکس سے ایک ارب ڈوز اور ایک
روسی کمپنی سے 10 کروڑ دوز کی فراہمی کے کنفرم معاہدے کیے ہیں۔

یورپی یونین نے 7 مختلف کمپنیوں سے مجموعی طور پر 1 ارب 20 کروڑ اور امریکا نے 6 کمپنیوں سے
مجموعی طور پر 1 ارب 1 کروڑ دوز خریدنے کا کنفرم معاہدے کیے ہیں۔

کنیڈا نے کورونا ویکسین کی 35 کروڑ 80 لاکھ ڈوزز، برطانیہ نے 35 کروڑ اور جاپان نے 29 کروڑ ڈوز
کے کنفرم سودے کر لیے۔

ویکسین کے کنفرم سودے کرنے والے ملکوں میں آسٹریلیا، نیپال، مصر، چلی، ازبکستان، سعودی عرب
انڈونیشیا، برازیل اور میکسیکو شامل ہیں۔

مظفرآباد میں کورونا کیسز زیادہ ہونے کی وجہ کیا ہے؟

بنگلا دیشن بھی ایک چینی فارما کپمنی سے ویکسین کی ایک لاکھ دوزز خریدنے کا معاہدہ کر چکا ہے۔
امریکا کی طرف سے مزید ایک ارب 60 کروڑ دوزز اور یورپی یونین کی طرف سے 76 کروڑ 50 لاکھ ڈوزز
خریدنے کے معاہدوں پر بات چیت جاری ہے۔

رپورٹ کے مطابق ویکسین کی حتمی قیمت کا اعلان تو ابھی تک کسی کمپنی نے نہیں کیا تاہم مارکیٹ
میں ایک دوز کی قیمت 3 ڈالر سے لے کر 37 ڈالر تک بتائی جا رہی ہے۔


شیئر کریں: