کشمور میں اجتماعی جنسی درندگی کی شکار بچی علیشہ کی حالت بدستور خراب

شیئر کریں:

لاڑکانہ سے شہزاد علی خان

کشمور میں تشدد اور اجتماعی جنسی درندگی کی شکار چار سالہ بچی علیشہ کی حالت بدستور خراب ہے۔
انسان نما درندوں کے ہاتھوں ظلم کا شکار ہونے والی بچی لاڑکانہ میں زیر علاج ہے۔

بچی کو مزید بہتر علاج کے لیے چانڈکا چلڈرن پیڈز سرجری وارڈ سے چائلڈ ایمرجنسی وارڈ میں شفٹ کر دیا گیا ہے۔
سندھ حکومت کی ہدایات پر ویمن کمیشن کی چیئرپرسن نزہت شاہین چلڈرن اسپتال پہنچی ہیں۔


نزہت شاہین نے بچی کی والدہ سے ملاقات کی اور ظلم کی شکار بچی کی عیادت کی۔

متاثرہ بچی علیشہ کی والدہ نے وزیر اعظم عمران خان اور چیئرمین پیپلز پارٹی بلاول بھٹو سے واقعہ میں
ملوث ملزمان کو سر عام پھانسی دینے کا مطالبہ کر دیا۔

والدہ تبسم مغل کا کہنا ہے ملزمان کو قرار واقعی سزا دی جائے تاکہ آئندہ ایسے واقعات رونما نہ ہو سکیں۔
بیٹی کی طبعیت ابھی ٹھیک نہیں اور اسے سانس لینے میں مشکلات پیش آرہی ہیں۔


شیئر کریں: