کتابوں کی قیمتیں 110 فیصد بڑھ گئیں، رضا الرحمن

شیئر کریں:

کتابوں کی قیمتیں آسمان سے باتیں کرنے لگی ہیں۔ لوکل کتابوں کی قیمتوں میں چھ ماہ کے دوران سو سے ایک سو دس فیصد تک اضافہ ھونے سے غریب کے بچہ کیلئے کتابیں خریدنا بھی مشکل ہوگیا ہے۔
صدر سرونگ اسکولز ایسوسی پاکستان رضاء الرحمن نے بڑھتی ھوئی کتابوں کی قیمتوں پر کہا ہے کہ100 روپے والی کتاب کی قیمت 200 روپے سے بھی زائد ہوگئی.رضا الرحمن کا کہنا ہے کہ 7 ہزار روپے والی غیر ملکی کتابوں کا کورس 12 ہزار روپے پر پہنچ گیا۔ کتابیں مہنگی ہونے سے شرح خواندگی میں کمی ہوگی، پیپر ملز نے مصنوعی قلت پیدا کرکے کتابوں کے ریٹ آسمان پر پہنچا دیئے ہیں ، پیپر مہنگا ہونے کے باعث پبلشرز کتابیں چھاپ کر نہیں دے رہا، صدر سرونگ سکولز کا کہنا ہے کہ
حکومت فوری طور پر پیپر کے اوپر سبسڈی جاری کریں ۔رضاء الرحمن نے کہا ہے کہ امپورٹ ڈیوٹی کم کرکے کتابوں کی قیمتوں میں کمی لائی جاسکتی ہے۔


شیئر کریں: