پی ٹی سی ایل کے رٹائرڈ ملازمین کا کرپشن مخالف احتجاج

شیئر کریں:

ڈیرہ اسماعیل خان سے توقیر زیدی

ڈیرہ اسماعیل خان میں پی ٹی سی ایل( ر) پنشنرز ملازمین اپنے ہی محکمے کے خلاف سراپا احتجاج بنے ہوئے ہیں۔ 40 ہزار پنشنرز بشمول انتظامیہ جن میں 11ہزار بیواوں کے حقوق غصب کیے جار رہے ہیں۔
ڈیرہ کے سابقہ PTCL ملازمین اپنے محکمے سے نالاں ہو کر سڑکوں پر احتجاج ریکارڈ کرانے نکل آئے۔ ڈیرہ پریس کلب کے سامنے درجنوں ریٹایرڈ ملازمین کا اپنے حقوق کے لئے شدید احتجاجی مظاہرہ کیا گیا۔ مختیار بلوچ کی قیادت میں پنشنرز نے اپنے محکمے کی منیجمنٹ کے خلاف خوب نعرے بازی کی۔ شرکاء نے پینرز اور کتبے اٹھا رکھے تھے جن پر مطالبات درج تھے۔ اس موقع پر مظاہرین کا کہنا تھا کہ ہمارے حقوق غصب کیے جار رہے ہیں پی ٹی سی ایل منیجمنٹ 2010 سے آج تک گورنمنٹ آف پاکستان کے اعلان کردہ سالانہ اضافے کو مسلسل ادا نہیں کر رہی۔ مختلف اعلی عدالتوں میں اپنے حقوق کے لیے کئی کیسسز جاری ہیں جبکہ سپریم کورٹ آف پاکستان 12.6.2015 کے فیصلے کے مطابق پی ٹی سی ایل پنشنرز کو اضافہ کا اہل قرار دے چکی ہے اس کے ساتھ ساتھ سینٹ کی قایمہ کمیٹی نے بھی محکمے کو پنشنرز کی تمام ادایگیٸوں کا حکم جاری کیا ہے مگر پی ٹی سی ایل منیجمنٹ نے تمام تر عدالتی فیصلوں کو ہوا میں اڑا دیا جبکہ توہین عدالت کی شنواٸی بھی ردی کی ٹھوکری میں ڈال دی گٸی جس سے 40 ہزار پنشنرز بشمول انتظامیہ جن میں 11 ہزار بیواوں کے حقوق غصب کیے جار رہے ہیں جس کی وجہ سے ملک کے تمام شہروں میں PTCL کے پنشنرز اپنے حقوق کے لئے سڑکوں پر دھکے کھار رہے ہیں۔ مقررین کا کہنا تھا کہ اگر حکومت ِوقت اور اعلی حکام نے ہمارے مطالبات پورے نہ کئے تو ہم اسلام آباد رخ کریں گے اور سپریم کورٹ کے سامنے دھرنا دیں گے۔


شیئر کریں: