March 22, 2020 at 1:54 pm

رپورٹ : علیم عُثمان

سنیچر کے روز وزیر اعلیٰ پنجاب عثمان بزدار کی زیر صدارت کرونا وائرس بحران بارے صوبائی کابینہ کے اجلاس میں 2 اھم وزراء میں شدید جھگڑا ہو گیا . اجلاس کے دوران صوبائی وزیر صحت ڈاکٹر یاسمین راشد اور پنجاب کے وزیر اطلاعات فیاض الحسن چوہان اس وقت آپس میں الجھ پڑے جب فیاض الحسن چوہان نے بھرے اجلاس میں یاسمین راشد سے کہا       ” ڈاکٹر صاحبہ آپ ینگ ڈاکٹروں کے ساتھ اپنے رویے میں تھوڑی نرمی لائیں ، ھم نے ان ایمرجنسی کے حالات اور بحرانی صورتحال میں ان سے کام لینا ھے ”

فیاض الحسن چوہان نے مزید کہا ” آپ کے سخت رویے کی وجہ سے ینگ ڈاکٹر کہتے ہیں ھم نے کام نہیں کرنا ” اس پر وزیر صحت فیاض الحسن چوہان پر برھم ہو گئیں ، ڈاکٹر یاسمین راشد نے غصے میں وزیر اطلاعات کو فوری بھری میٹنگ میں ڈانٹتے ہوئے کہا ” آپ اپنے کام سے کام رکھیں ، آپ کی آئے روز کی نان سینس statements ھمیں بھگتنا پڑتی ہیں ”

ذرائع کے مطابق اس موقع پر اجلاس میں شدید بدمزگی ہوگئی ، چیف سیکرٹری پنجاب میجر (ر) اعظم سلیمان نے آٹھ کر پی ٹی آئی کے دونوں صوبائی وزراء میں بیچ بچاؤ کروایا ، اور ماحول کو مزید تلخ ہونے سے بچایا . .

مقتدر حلقوں میں اس واقعہ کو بہت سنجیدگی سے لیا گیا ہے اور کہا گیا ہے کہ وزیراعظم کے ” وسیم اکرم پلس ” یعنی وزیر اعلیٰ عثمان بزدار اور اس کی ٹیم کی سنجیدگی اور اہلیت اس واقعہ سے مزید عیاں ہوگئی ہے ، پورا ملک کتنے سنگین قومی بحران کی زد میں ہے اور پنجاب حکومت کا یہ حال ہے ، ایسے ھنگامی حالات اور ایمرجنسی صورتحال سے ایسی غیر سنجیدہ ٹیم کیا نمٹے گی  . .

ذرائع کا کہنا ہے کہ مقتدر حلقوں میں کہا جارہا ھے کہ اھم  قومی امور میں فیصلہ کن کردار کی حامل قوتوں اور قومی سلامتی کے ذمہ دار اداروں نے انتظامی کنٹرول سنبھال لینے اور آگے آکر معاملات کو اپنے ہاتھ میں لے لینے کا جو اصولی فیصلہ کیا تھا ، اس واقعہ نے اس کے درست اور بروقت ہونے پر مہر تصدیق ثبت کر دی ہے . .

ذرائع کے مطابق مقتدر قوتوں نے کرونا وائرس کی وباء تیزی سے پھیلنے کے پیش نظر ملک بھر کو لاک ڈاؤن کرنے کا حتمی فیصلہ کر لیا ہے جبکہ وزیراعظم نے دیگر سیاسی قوتوں کو اس بابت اعتماد میں لینے اور اس سلسلہ میں سیاسی حکومت کی پوزیشن واضح کرنے کی غرض سے اپوزیشن جماعتوں سے رابطے تیز کر دیئے ہیں تاکہ ملک بھر میں لاک ڈاؤن اور سول انتظامیہ کی مدد کے لئے فوج طلب کرنے جیسے انتہائی نوعیت کے اقدام کو قومی اتفاق رائے اور سیاسی ھم آہنگی کی پشت پناہی حاصل ہو  . .

ذرائع کا کہنا ھے کہ کرونا وائرس سے نمٹنے بارے قومی حکمت عملی کی تشکیل کو تمام سیاسی قوتوں کی حمایت فراہم کرنے کی غرض سے سیاسی جماعتوں کی ” آل پارٹیز کانفرنس ” (اے پی سی) جلد منعقد ہونے کا امکان ھے .

Facebook Comments