March 23, 2020 at 12:04 am

رپورٹ : علیم عُثمان

پنجاب بھر میں ” لاک ڈاؤن ” کا عملی آغاز ہو گیا ہے ، بڑے شہروں ، خاص کر لاہور میں اس کا اندازہ شہریوں کو اس وقت ہوا جب اتوار کے روز انہوں نے چہرے پر ماسک چڑھائے بغیر میٹرو اور اسپیڈو بسوں پر سوار ہونے کی کوشش کی تو انہیں سوار نہیں کیا گیا جبکہ صوبہ بھر کے قصبات اور دیہات میں فاسٹ فوڈ کی دکانیں تک پولیس نے بند کروانا شروع کر دیں . .

لاہور میں اتوار کے روز سے پنجاب حکومت کے اس فیصلے پر عمل درآمد کا آغاز کر دیا گیا جو ہفتے کے روز صوبائی کابینہ کے خصوصی اجلاس میں کیا گیا تھا ، فیصلے کے تحت لاہور ، ملتان اور راولپنڈی میں چلنے والی میٹرو بسوں میں سوار ہونے کے لئے شہریوں کے لئے ” فیس ماسک ” لازمی قرار دے دیا گیا ہے . اجلاس میں پہلے صوبہ بھر میں میٹرو سمیت تمام پبلک ٹرانسپورٹ فوری طور پر بالکل بند کر دینے کی تجویز پیش ہوئی تھی تاھم اسے یہ کہہ کر مسترد کردیا گیا کہ یہ روزمرہ زندگی کی عوامی ضرورت ھے ، اسے بند کر دینے سے عوام میں بڑے پیمانے پر بے چینی اور شدید منفی رد عمل پیدا ھوگا

کرونا وائرس کے پھیلاؤ کے ڈر سے پنجاب بھر میں میٹرو اور ” سپیڈو ” بسوں میں مسافروں کے لئے فیس ماسک لازمی پہننے کی پابندی بارے تحریری ” وارننگ ” چسپاں کر دی گئی ہیں جس پر عملدرآمد یقینی بنانے کے لئے اتوار کو سارا دن پولیس بطور چیکرز ” چھاپے ” مارتی رہی . شہر میں چلنے والی سرخ رنگ کی سپیڈو بسوں کے مختلف روٹس پر مختلف سٹاپس پر ASI عہدہ کے پولیس افسران بسوں میں چڑھ کر مسافروں کو چیک کرتے رہے اور بغیر فیس ماسک سفر کرنے والے شہریوں کو بسوں سے اتارتے رہے . .

اس کے علاوہ سپیڈو بس کے کنڈکٹرز کو ہدایات جاری کی گئی ہیں کہ فیس ماسک پہنے بغیر کوئی شہری اگر بس میں سوار ہو بھی جائے تو اسے کہا جائے کہ وہ رومال یا کوئی کپڑا بطور ماسک ناک پر چڑھا لے ، اور کسی کے پاس رومال یا چہرہ ڈھانپنے کے لئے کوئی کپڑا بھی نہ ہو تو اسے وارننگ دے دی جائے کہ next ٹائم اسے فیس ماسک کے بغیر ہرگز سوار نہیں ہونے دیا جائے گا . .

جبکہ میٹرو بس پر سوار ہونے کے لئے فیس ماسک نہ پہنے ہوئے شہریوں کو ٹوکن جاری کرنا بند کردیا گیا ہے اور سمارٹ کارڈ رکھنے والے ایسے شہریوں کا میٹرو سٹیشنوں میں داخلہ روک دیا گیا ہے . اس مقصد کے لئے ہر میٹرو سٹیشن پر داخلی راستے کے آر پار دو دو اہلکار تعینات کر دیئے گئے ہیں . .

اس کے علاوہ ہر سپیڈو بس ٹرمینل پر sanitiser سے ہاتھ دھونے کے لئے کیبن نما واش رومز نصب کر دیئے گئے ہیں . .

دریں اثناء صوبے کے چھوٹے شہروں اور قصبہ جات ، حتیٰ کہ گاؤں کی سطح پر بھی غیر علانیہ لاک ڈاؤن شروع ہو گیا ھے جہاں اتوار کو پولیس دکانیں اور جنرل سٹورز ، یہاں تک کہ برگر اور سینڈوچ کی چھوٹی چھوٹی دکانیں بند کرواتی رہی .

Facebook Comments