پاکپتن میں پراٹھے کھانے سے ماں اور 3 بچے جاں بحق

شیئر کریں:

پاکپتن سے محمود احمد رضا

پاکپتن میں ناشتہ کے وقت پراٹھے کھانے سے جاں بحق ہونے والوں کی تعداد چار ہو گئی ہے۔ اس واقعہ میں
پہلے تین بچے جان سے گئے اور پھر اب ان کی ماں بھی دم توڑ گئی۔

تشویش ناک حالت میں پاکپتن سے علاج کے لیے بچوں کی ماں کو لاہور لے جایا گیا تھا جہاں وہ بھی
جانبر نہ ہو سکی۔

بدقسمت خاندان کا ایک کمسن بچہ اسپتال میں موت اور زندگی کی جنگ لڑ رہا ہے۔ دو روز قبل پراٹھے
کھانے سے ماں اور چار بچوں کی حالت غیر ہوگئی تھی۔

افسوس ناک واقعہ گاؤں 143 ای بی میں پیش آیا جہاں ایک ہی گھر میں اتنی اموات پر پورے علاقہ
کی فضاء سوگوار ہے۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ اموات کی وجہ جاننے کی کوششیں جاری ہیں تاہم ابھی تک یہ معلوم نہیں ہو
سکا کہ آٹے میں کسی نے کچھ ملایا تو نہیں تھا؟


شیئر کریں: