پاکستان کے سوا دنیا کے کئی ممالک کورونا ویکسین خرید چکے

شیئر کریں:

امیر ممالک میں زیادہ سے زیادہ کورونا ویکسین خریدنے کی دوڑ جاری ہے متعدد ممالک نے تو
اپنی پوری آبادی سے بھی کئی گنا زیادہ ڈوز خرید لی ہیں۔

کینیڈا نے جتنی ڈوز کے کنفرم سودے کر لیے وہ اس کو پوری آبادی کو پانچ پانچ مرتبہ لگانے کے
بعد بھی بچ جائیں گی۔

بھارت بھی اب تک اپنی 66 فیصد آبادی کے لیے ڈوز خرید چکا ہے دوسری طرف پاکستان نے ابھی تک
ایک ڈوز کا بھی کنفرم سودا نہیں کیا۔

پاکستان نے کورونا ویکسین کی 12 لاکھ خوراکیں خریدنے کی تیاری کرلی

امیر ملکوں کی طرف سے مجموعی طور پر اب تک 4 ارب 12 کروڑ 40 لاکھ ڈوز خریدی جا چکی ہیں۔
اپر مڈل انکم والے ملکوں نے ایک ارب 12 کروڑ 59 لاکھ ڈوز اور لوئر مڈل انکم والے ملکوں نے ایک
ارب 95 کروڑ 96 لاکھ ڈوز خریدی ہیں۔

مجموعی طور پر ابھی تک ویکسین کی 12 ارب 10 کروڑ ڈوزز کے سودے ریکارڈ پر آئے ہیں۔
کم آمدنی والے کسی ملک کی طرف سے ایک ڈوز کی بھی کنفرم ڈیل ابھی تک رکارڈ پر نہیں آئی تاہم
عالمی ادارہ صحت اور یورپین کمیشن کی طرف سے غریب ملکوں کو ویکسین کی فراہمی کے لیے بنائی گ
ئی تنظیم کوویکس نے مجموعی طور پر ویکسین کی 1 ارب 37 کروڑ دوز خریدی ہیں۔

کورونا ویکسین لگوانے سے خواتین کی داڑھی نکل سکتی ہے

رپورٹ کے مطابق کینیڈا اپنی پوری آبادی کو 5 مرتبہ سے زائد ویکسین لگانے کے برابر ڈوزز کے
کنفرم سودے کر چکا ہے۔

برطانیہ کے کنفرم سودے پوری آبادی کو تقریبا تین مرتبہ ویکسین لگانے کے لیے کافی ہیں۔
نیوزی لینڈ اور چلی اپنی تمام آبادی کو ڈھائی مرتبہ جبکہ امریکا اور یورپی یونین تمام آبادی کو دو
مرتبہ لگانے جتنی ڈوزز خرید چکا ہے۔

بھارت کے کنفرم سودے اس کی 66 فیصد آبادی اور بنگلا دیش کے سودے اس کی 9 فیصد آبادی
کی ویکسینیشن کے لیے کافی ہیں۔


شیئر کریں: