پاکستان کے خلاف کام کرنے والے خطرناک ترین 14 لوگ

شیئر کریں:

تحریر: شہزادہ احسن اشرف شیخ
سابق وفاقی وزیر

پاکستان کے خلاف کام کرنے والے چودہ لوگ انتہائی خطرناک ہیں۔
یہ لوگ دشمن سے پیسے لے کر ریاست پاکستان اور حکومت کو بلیک میل کر رہے ہیں۔
ان لوگوں میں الطاف حسین، حسین حقانی، محمود اچکزئی، اسفند یار ولی اور نواز شریف شامل ہیں۔
نجم سیٹھی، حامد میر، براحمداغ بگٹی، طارق فتح، آصف علی زرداری اور پرویز ہود بھائی بھی ان غداروں میں شامل ہیں۔
مولانا فضل الرحمن، محرب مری، منظور پشتون اور ملک ریاض بھی وطن سے دشمنی میں کسی سے پیچھے نہیں۔
دنیا کی کوئی سو فیصد شرح خواندگی کی حامل حکومت، فوج اور ریاستی مشنری بھی خود پر اور عوام کے متخب وزیراعظم پر اتناعرضہ تنقید نہ پرداشت کرتی۔

اس ملک کی بدقسمتی

ان غداروں میں کچھ لوگ دشمنوں کے بندے ہیں اور کچھ نے ریاست کے ساتھ ایسا برتاو کیا کہ انہیں دشمنوں نے اپنا لیا۔
کچھ سیاست دانوں نے دیکھا کہ ان کا لوٹا ہوا خزانہ خطرے میں ہے تو انہوں نے دشمن سے ہاتھ ملا کر اپنی دھرتی ماں کو بیچنا شروع کردیا۔ اگر خدانخواستہ یہ لوگ دوبارہ اقتدار پر برجمان ہوگئے تو یہ پاک فوج اور سیاسی مخالفین سے ایسا انتقام لیں گے جو پاکستان کے تابوت میں آخری کیل ثابت ہوگا۔

مسلم لیگ ن کے لیے چند سوالات

ایسے لوگ جو وطن چھوڑ کربھاگ جاتے ہیں اور عدالتوں کا سامنا نہیں کرتے ان کی سیاست پر پابندی ہونی چاہیے۔ نہ صرف ان کی بلکہ ان کے خاندان کے دیگر افراد پر بھی مکمل پابندی ہونی چاہیے کہ وہ سیاست میں حصہ نہ لے سکیں۔
ہمارے ملک کی بدقستمی ہے کہ ہماری بیشتر عوام کم پڑھی لکھی ہے، شرح خواندگی کم ہے اور لوگ لالچ میں آکر ان دھوکے باز جماعتوں کے نرغے میں آجاتے ہیں جس سے ملک کا نقصان ہوتا ہے۔
ان سیاست دانوں کے لوگ میڈیا پر بیٹھ کر اس قدر زہر اگلتے ہیں کہ سچ جھوٹ اور جھوٹ سچ لگنے لگتا ہے۔

پاکستان دشمنی میں مولانا بہت آگے نکل گئے

دوسری طرف مذہب کا لبادہ اوڑھے لوگ مذہب کے نام پر لوگوں کو اس قدر ڈرا دیتے ہیں کہ غریب لوگ ان کے ڈر سے ریاست کو نقصان پہنچانے کے لیے تیار ہوجاتے ہیں۔ ان تمام معملات کے پیش نظر ہماری قیادت کو بہادری سے فیصلے لینا ہوں گے۔ اداروں کو بھی وقت پر بیدار ہونا ہوگا ورنہ آںے والی نسلوں کے لیے بہت دیر ہوجائے گی۔ یار رکھیں کمال اتا ترک، موزے تونگ، فیدرکاسترو اور قائد اعظم سمیت دیگر رہنما اپنی ایمانداری، قربانیوں، پختہ ارادوں اور لگن کے ساتھ برائی کے خلاف جنگ کرتے رہے اور انہوں نے اپنی اقوام کو سب سے بہترین ممالک دیے۔

دنیا بھر میں انتخابات خفیہ ایجنسیوں کے بغیر ممکن نہیں‌

وقت پر لگا ہوا ایک ٹانکا بڑی بچت کا سبب بناہے۔ ان چودہ افراد کے خلاف مکمل تحقیقات ہونی چاہیں۔ ان میں کچھ کو عدالتوں میں بیجھا جائے، کچھ کو وارننگ دی جائے، چند پر پابندی عائد کی جائے گی، کچھ پر غداری کے مقدمے چلائے جائیں اور چند غداروں کو چوکوں میں لٹکا دیا جائے۔

ذاتی مفاد کیلیے ملکی سلامتی داو پر لگانے والے غدار

لیکن یہ سب کرے گا کون؟ یہ تو وقت بتائے گا۔ ہمیں ان اقدام کی فوری ضروت ہے۔ ابھی نہیں تو کبھی نہیں۔
ملک میں بہت سارے باصلاحیت نوجوان ہیں جو حرام کا پیسہ نہ ہونے کی وجہ سے الیکشن میں حصہ نہیں لے سکتے۔ اگر ماضی کی حکومتیں حرام رقم نہ بناتی تو باقی بھی حرام کی طرف راغب نہ ہوتے۔ نواز شریف، آصف زرداری، اسحاق ڈار، رحمان ملک، راجہ رینٹل سمیت دیگر کرپٹ سیاست دانوں کے برطانیہ میں محل ہیں۔
معزرت کے ساتھ اسلامی ممالک میں ستر فیصد لوگ رشوت، بلیک میلنگ، تجاوزات اور دیگر ذرائع سے حرام کی کمائی کھاتے ہیں اور انہیں اپنی موت کا کوئی ڈر نہیں۔
برائی پر قابو پانے کا یہ صحیح وقت ہے۔ ایسا نہ ہو کہ ہم بہت دیر کردیں کیوں کہ وقت ختم ہوتا جارہا ہے۔
شہزادہ احسن اشرف شیخ


شیئر کریں: