پی ڈی ایم جلسہ، کوئٹہ میں موبائل سروس معطل

شیئر کریں:

پاکستان ڈیمو کریٹک موؤمنٹ ( پی ڈی ایم) کے کوئٹہ جلسے کی تیاریاں مکمل کرلی گئی ہیں۔
ایوب اسٹیڈیم کے اندر اور باہر ہر طرف پارٹی پرچموں کی بہار ہے۔
سیکیورٹی خدشات کے باعث موٹڑ سائیکل کی ڈبل سواری پر پابندی عائد کردی گئی ہے

نیکٹا کے تھریٹ کے باوجود حکومت مخالف اپوزیشن جماعتوں
کی تحريک کے تيسرے جلسے کيلئے کوئٹہ ميں ميدان سجا ليا گیا ہے۔ م
ریم نواز نے نوازشریف کے خطاب کی تصدیق کردی ہے۔

بلوچستان حکومت نے سیکیورٹی خدشات کے باعث دفعہ 144 نافذ کردی ہے،
جب کہ موٹر سائیکل کی ڈبل سواری پر بھی پابندی عائد رہے گی۔
اس دوران اسلحہ لیکر چلنے اور نمائش پر بھی پابندی ہوگی۔
پی ڈی ایم قیادت کا کہنا ہے کہ عوام کے تحفظ کی ذمہ داری حکومت کی ہے
پی پی چیئرمین بلاول بھٹو زرداری خود جلسے میں شریک نہیں ہونگے، ان کا ویڈیو لنک سے خطاب متوقع ہے۔

بلاول نے جیالوں کو بھرپور شرکت کی ہدایت کردی ہے۔
کوئٹہ کے ایوب اسٹیڈیم میں پنڈال کو مکمل طور پر سجا دیا گیا ہے،
جب کہ ساؤنڈ سسٹم اور اسٹیج بھی قائد کے استقبال کیلئے تیار ہے۔
جلسے کی سیکيورٹی کیلئے 4 ہزار سے زائد اہلکاروں کو تعینات کیا گیا ہے۔
جلسے کیلئے پنڈال میں ہزاروں کرسیاں بھی لگا دی گئی ہیں۔

جلسے کی سیکيورٹی کیلئے 4 ہزار سے زائد اہلکاروں کو تعینات کیا گیا ہے۔
جلسے کیلئے پنڈال میں ہزاروں کرسیاں بھی لگا دی گئی ہیں۔
پولیس، ایف سی اور لیویز کے ساتھ جمعیت علماء اسلام کے انصار الاسلام کے رضاء کار بھی سیکیورٹی فرائض پر مامور ہیں
سیکیورٹی کے پیش نظر کوئٹہ شہر میں موبال فون سروس معطل کردی گئی ہے۔
پی ڈی ایم کا جلسے کیلئے کارکنوں کو 1 بجے کا ٹائم دے دیا گیا ہے۔
جلسہ 2 بجے شروع ہوگا۔ مسلم لیگ ن کے قائد میاں محمد نواز شریف لندن
سے ویڈیو لنک کے ذریعے جلسے کے شرکاء سے خطاب کرینگے۔

واضح رہے کہ نیشنل کاؤنٹر ٹیررازم اتھارٹی نے کوئٹہ میں دہشت گرد حملے
کا تھریٹ الرٹ جاری کرتے ہوئے خبردار کیا ہے کہ ٹی ٹی پی نے
پشاور اور کوئٹہ میں دہشت گردی کی منصوبہ بندی کر رکھی ہے


شیئر کریں: