پاکستان میں کورونا سے 10 ڈاکٹرز شہید،ہیلتھ ورکرز سمیت 668 متاثر

شیئر کریں:

دنیا بھر کی طرح پاکستان میں بھی صحت کے شعبہ سے وابستہ افراد کورونا وائرس سے متاثر ہورہے ہیں۔
ملک میں اس وقت تک کتنے فرنٹ لائن ورکرز کورونا کی لپیٹ میں آئے خبر والے نے تفصیلات معلوم کر لی ہیں۔

نیشنل ایمرجنسی آپریشن سینٹر وزارت قومی ہیلتھ کی رپورٹ کے مطابق مُلک بھر میں
اب تک 333 ڈاکٹرز، 108 نرسیں اور 227 ہیلتھ اسٹاف کورونا سے متاثر ہوئے ہیں۔
اس طرح مجموعی طور پر 668 ہیلتھ کئیر ورکرز کورونا کی وبا میں مبتلاء ہوچکے ہیں۔
رپورٹ کے مطابق 316 آئسولیشن، 187 اسپتالوں میں زیر علاج ہیں اور 155 کو ڈسچارج کیا جاچکا ہے۔
پاکستان میں اس وقت تک ڈاکٹرز سمیت 10 ہیلتھ کیئر ورکرز شہید ہو چکے ہیں۔
آزاد کشمیر میں ایک ڈاکٹر 3 ہیلتھ ورکرز اور بلوچستان میں 90 ڈاکٹرز، 4 نرس
اور 37 ہیلتھ اسٹاف متاثر ہوا۔
گلگت بلتستان میں ایک ڈاکٹر اور 18 ہیلتھ کا عملہ اور اسلام آباد میں 31 ڈاکٹرز،13 نرس
اور 16ہیلتھ اسٹاف شامل ہے۔
خیبر پختونخواہ میں 70ڈاکٹرز، 27 نرسز اور 16 ہیلتھ اسٹاف اور پنجاب میں 85 ڈاکٹرز، 46نرسز
اور 53 عملہ وائرس کا شکار ہوا۔
اسی طرح سندھ میں 55ڈاکٹرز، 17 نرسز اور 37 ہیلتھ ورکز کورونا وائرس سے متاثر ہو چکے ہیں۔
پاکستان میں ویسے ہی ڈاکٹر کی شدید قلت ہے ایسے میں ناکافی حفاظتی انتظامات نہ ہونے کی وجہ سے
ڈاکٹرز اور ہیلتھ ورکرز کی زندگیوں کو شدید لاحق ہو چکے ہیں۔
یہی وجہ ہے کہ ملک بھر کے ڈاکٹرز حکومت سے مطالبہ کر رہے ہیں کہ انہیں ضروری سامان فراہم کیا جائے۔
ملک میں245ہیلتھ پروفیشنلز کورونا سے متاثر
ڈاکٹرز بھی یہ کہنے پر مجبور ہو چکے ہیں انہیں سلوٹ نہیں چاہیے بس ہمیں کورونا وائرس سے بچاؤ
کا ضروری سامان فراہم کیا جائے۔
ڈاکٹرز تنظمییں چاروں صوبوں میں کورونا وائرس کا پھیلاو روکھنے کے لیے موثر حکمت عملی
اختیار کرنے کا مطالبہ کرتی رہی ہیں۔

ڈاکٹرز کا کہنا ہے کہ حکومت کی جانب سے اٹھائے گئے اقدامات مناسب نہیں۔
حکومت کو سماجی فاصلے پر سختی سے عملدرآمد کرانا ہو گااسی میں سب کا فائدہ ہے۔


شیئر کریں: