پاکستان میں غیرملکی سرمایہ کاری 71فیصد کم ہو گئی

‫حکومت کی طرف سےغیرملکی سرمایہ کاروں نے ذخائر بڑھادیے‬
شیئر کریں:

پاکستان میں غیر ملکی سرمایہ کاری مزید کم ہو گئی ستمبر کے دوران غیر ملکی سرمایہ کاری
میں 71 فیصد کمی رکارڈ کی گئی۔
مالی سال کی پہلی سہ ماہی میں مجموعی طور پر سرمایہ کاری کا حجم 40 کروڑ ڈالر سے کم رہا۔
اسٹیٹ بینک کے مطابق ستمبر کے دوران ملک میں غیر ملکی سرمایہ کاری کا حجم 17 کروڑ
87 لاکھ ڈالر رہا۔
گزشتہ سال ستمبر میں 62 کروڑ 8 لاکھ ڈالر کی نئی سرمایہ کاری ہوئی تھی۔
رپورٹ کے مطابق رواں مالی سال کے پہلے تین ماہ کے دوران مجموعی طور پر پاکستان میں غیر ملکی
سرمایہ کاری کا حجم 38 کروڑ 89 لاکھ ڈالر رہا جو گزشتہ مالی سال اس عرصے سے 56.3 فیصد کم ہے۔

گزشتہ مالی سال پہلی سہ ماہی میں 89 کروڑ دالر کی نئی سرمایہ کاری ہوئی تھی۔
جولائی سے ستمبر تک پاکستان میں غیر ملکیوں کی طرف سے نجی شعبے میں نئی سرمایہ کاری کا
حقیقی حجم 30 کروڑ 72 لاکھ ڈالر رہا جو پہلے سے 26 کروڑ 10 لاکھ ڈالر کم ہے۔
تین ماہ میں صنعتی شعبے میں براہ راست نئی غیر ملکی سرمایہ کاری کا حقیقی حجم 41 کروڑ 57 لاکھ ڈالر رہا۔
تاہم اسٹاک مارکیٹ میں بیرونی سرمایہ کاری سے 10 کروڑ 85 لاکھ ڈالر مکل گئے۔
اس دوران حکومتی بانڈز اور ٹی بلز میں 8 کروڑ 17 لاکھ ڈالر کی سرمایہ کاری ہوئی جو گزشتہ
مالی سال سے 74.6 فیصد کم ہے۔

رپورٹ کے مطابق 3 ماہ کے دوران چین کی طرف سے 10 کروڑ 29 لاکھ ڈالر کی نئی سرمایہ کاری ہوئی۔
امریکی سرمایہ کار پہلی سرمایہ کاری سے بھی 5 کروڑ ڈالر اور برطانوی سرمایہ کار 5 کروڑ 74
لاکھ ڈالر نکال کر لے گئے۔


شیئر کریں: