پاکستان انگلینڈ کے یادگار اور تنازعات سے بھرپور کرکٹ ٹیسٹ

شیئر کریں:

پاکستان انگلینڈ کی ٹیسٹ سیریز 5 اگست سے مانچسٹر سے شروع ہو رہی ہے۔
دونوں ممالک کے مقابلے ہمیشہ ہی یاد گار، دلچسپ اور بعض تناعات کا شکار رہے ہیں۔
66 سالہ تاریخ میں کئی یادگار میچ ہوئے لیکن 4 میچ بہت زیادہ خبروں میں رہے۔

1987کا فیصل آباد ٹیسٹ مائیک گیٹنگ کے امپائر شکور رانا کے جھگڑے کی وجہ سے یادگار بنا۔
دوسرے ٹیسٹ کے دوسرے دن امپائرنے مائیک گیٹنگ اور بائولر کے رنراپ لینے کے بعد
فیلڈنگ کی تبدیلی پر روکا تو جھگڑا بڑھ گیا۔
گیٹنگ ٹیم لے کر میدان سے باہر چلے گئے اور پورا دن کھیل ممکن نہ ہوسکا۔
آخر کار مائیک گیٹنگ نے امپائر سے معافی مانگی تو اگلے روز کھیل شروع ہو سکا اور میچ ڈرا ہوا۔
پاکستان 1987 سے انگلینڈ میں سب سے زیادہ ناقابل شکست رہنے والا ملک رہا ہے۔

2000میں انگلینڈ نے کراچی میں یادگار ٹیسٹ جیتا کیونکہ یہ اس میدان میں اس کی46برس
بعداولین اور پاکستانی سرزمین پر39 سال بعد 19میچزکے بعد پہلی فتح تھی۔

2006میں اوول ٹیسٹ میں انضمام کی قیادت میں کھیلنے والی پاکستانی ٹیم پر بال ٹیمپرنگ
کا الزام امپائر نے عائد کردیا۔

کپتان میدان سے ٹیم سمیت چلے گئے آئی سی سی کی تحقیقات میں امپائر غلط ثابت
ہوئے اور یہ متنازعہ ٹیسٹ بن کر رہ گیا۔

2010کا لارڈز ٹیسٹ تو گزشتہ 3 مشہور میچز سے بھی آگے نکل گیا جب پاکستان کے کپتان
سلمان بٹ، باولر محمد آصف اور محمد عامر اسپاٹ فکسنگ کیس میں رنگے ہاتھوں پکڑے گئے۔

تینوں کو جیل کی سزا بھی ہوئی اور معطلی کا بھی سامنا رہا عامر تو انٹر نیشنل کرکٹ میں واپس
آگئے لیکن دونوں قصہ پارینہ بن کر رہ گئے۔


شیئر کریں: