پاکستانی نے امریکا پر 20 ارب ڈالر کا ہرجانہ دائر کردیا

شیئر کریں:

پاکستانی نے امریکا کے خلاف 20 ارب ڈالرز ہرجانے کا دعویٰ دائرکردیا۔
پاکستان کے شہری رضا علی نے امریکا کو کورونا وائرس کے پھیلاؤ کا زمہ دار قرار دے دیا۔

درخواست 8 اگست کو سول کورٹ لاہور میں سماعت کے لیے مقرر کردی گئی ہے۔
سول جج لاہور کامران کرامات درخواست پر سماعت کریں گے۔

درخواست میں امریکی کونسل جنرل، امریکی ایمبیسی اور امریکی سیکریٹری دفاع کو فریق بنایا گیا۔
پاکستانی وزارت خارجہ، عالمی ادارہ صحت اور سیکریٹری صحت کو بھی فریق بنایا گیا ہے۔

درخواست گزار نے نیشنل ڈیزاسٹر منیجمنٹ کو بھی فریق بنایا اور متعلقہ فریقین کو نوٹس جاری کر دیے۔
درخواست گزار کے مطابق کورونا وائرس کے باعث ذاتی طور پر اور ملک کو بھاری نقصان اٹھانا پڑا۔

درخواست گزار نے عدالت سے امریکا کو کورونا وائرس کا زمہ دار قرار دینے کی استدعا کر دی۔
کورونا وائرس سے درخواست گزار اور تمام پاکستانی شہریوں کو خطرے میں ڈالا گیا۔

درخواست گزار رضا علی نے استدعا کی ہے کہ عدالت 20 ارب امریکی ڈالرز دینے کا حکم جاری کرے۔
امریکا بطور سپر پاور اپنا کردار ادا کرنے میں ناکام رہا اور ڈبلیو ایچ او کی ہدایات کو بھی نظر انداز کیا۔

امریکی لیڈرز نے وائرس سے متعلق جھوٹ بولا اور عراق کے ایٹمی ہتھیاروں سے متعلق بھی امریکا جھوٹ بول چکا ہے۔

فریقین دنیا بھر میں اموات کی بڑھتی شرح، غربت اور معاشی تباہ کاریوں کے زمہ دار ہیں۔
فریقین کا احتساب کیا جائے اور انہیں انصاف کے کٹہرے میں لایا جائے۔

بدقسمتی سے امریکا میں چند عناصر اپنے مخالفین کے خلاف نقصان دہ حربے استعمال کرتے ہیں۔
کورونا کی شکل میں قدرت نے بدلہ لے لیا اور بدقسمتی سے ہزاروں لوگ اپنی جانیں گنوا بیٹھے۔
موجودہ امریکی انتظامیہ کووڈ 19 کے خلاف عالمی لڑائی میں رخنے ڈالتی رہی۔

دہشت گردی کے خلاف جنگ میں پاکستان امریکا کا اتحادی رہا ہے۔
دہشت گردی کے خلاف جنگ میں پاکستان کو ایک سو ارب ڈالرز سے زائد کا نقصان اٹھانا پڑا۔
عالمی مالیاتی ادارے حکومت پاکستان کو سبسڈیز میں کمی اور ٹیکسز بڑھانے پر زور دے رہے ہیں۔
پاکستان میں بے روزگاری کی شرح کا گراف اوپر اور معیشت ڈوبتی جا رہی ہے۔
لاہور کی سول کورٹ میں مقدمہ ایڈووکیٹ ظل حیدر کی جانب سے دائر کیا گیا ہے۔


شیئر کریں: