پابندی کے باوجود پاکستان بھارت میں 60 ارب کی تجارت

شیئر کریں:

پاکستان اور بھارت کی باہمی تجارت سرکاری طور پر معطل ہونے کے باوجود 10 ماہ کے دوران ساڑھے ساٹھ ارب روپے کی دوطرفہ تجارت ہوئی۔
صرف اپریل کے دوران 1 ارب 73 کروڑ روپے کی اشیا کا لین دین ہوا۔
پاکستان نے گزشتہ سال اگست سے بھارت کے ساتھ ہر قسم کی دو طرفہ تجارت معطل کر رکھی ہے۔
باہمی تجارت کافی حد تک کم تو ہو گئی لیکن مکمل بند نا ہو سکی اور معطلی کے باوجود اربوں روپے کی تجارت ہوتی ہی رہی۔
اسٹیٹ بینک کے مطابق رواں مالی سال جولائی سے اپریل کے اختتام تک پاکستان اور بھارت کی تجارت کا حجم تقریبا 60 ارب 69 کروڑ روپے رہا۔
اس دوران 56 ارب 69 کروڑ 71 لاکھ روپے مالیت کی اشیا بھارت سے پاکستان درآمد کی گئیں اور بھارت کو فروخت کی جانے والی اشیا کی مالیت 3 ارب 99 کروڑ 87 لاکھ روپے تھی۔
رپورٹ کے مطابق اپریل میں دو طرفہ تجارت کا حجم تقریبا 1 ارب 73 کروڑ روپے رہا۔
ایک ارب 44 کروڑ 55 لاکھ روپے مالیت کی اشیا بھارت سے پاکستان آئیں اور 29 کروڑ 38 لاکھ روپے کی اشیا بھارت برآمد کی گئیں۔


شیئر کریں: