وفاقی وزیر فخر امام کے شہر میں‌ کسانوں کا حکومت مخالف احتجاج

شیئر کریں:

خانیوال سے امین وارثی

وفاقی وزیر تحفظ خوراک سید فخر امام کے شہر میں ہزاروں کسانوں کاشتکاروں کا حکومت کے خلاف احتجاجی جلسہ منعقد
کیا گیا گندم کی قیمت 2200روپے مقرر کرنے سمیت فصلوں کے پیداواری اخراجات کم کرنے کا مطالبہ کیا گیا.

پاکستان کسان اتحاد تحصیل کبیروالا کے صدر میاں یعقوب جھنڈیر, مہر خضرحیات ہراج, عبدالرشید باٹی کی میزبانی میں گزشتہ روز تاج محل میرج ہال کبیروالا میں کسانوں کاشتکاروں زمینداروں کا بڑا احتجاجی جلسہ ہوا جس میں پنجاب کے اضلاع قصور, اوکاڑہ, لودھراں, ملتان, بہاولپور, بہاولنگر, جھنگ اور خانیوال سے سینکڑوں کسانوں کاشتکاروں کے قافلے شریک ہوئے اس موقع پر پاکستان کسان اتحاد کے مرکزی صدر خالد کھوکھر نے خطاب کرتے ہوئے حکومت سے گندم کی امدادی قیمت 2200مقرر کرنے اور فصلوں کے پیداواری اخراجات کم کرنے کا مطالبہ کیا اور کسان کی مشکلات بیان کیں.

جلسہ عام سے پاکستان کسان اتحاد کے مرکزی جنرل سیکرٹری احسان اکرم, صوبائی صدر پنجاب چوہدری رضوان اقبال, صوبائی جنرل سیکرٹری رانا شمشاد, مرکزی ترجمان سردار سعید جعفر ڈوگر سمیت نواب مصباح خان ترین ,سردار اورنگزیب بیگوکا,ڈاکٹر امتیاز, حاجی صابر مغل،رانا آمین اوتیرا,میاں ساجد بودل،چوھدری اکرم کمبوہ ،حافظ حفیط احمد ،میاں دلشاد متیانہ ,مہر اظہر سیال, میاں فیاض بلوچ ۔سنپال۔سردار محسن ڈوگر ۔سردار عرفان ڈوگر۔چوھدری حسان الہی۔سجاد نازش نے اظہار خیال کیا ,حکومت کے خلاف کبیروالا میں پاکستان کسان اتحاد کا احتجاجی جلسہ اس لحاظ سے خاص اہمیت رکھتا ہے کہ اسی شہر سے منتخب ہونے والے ایم پی اے سید حسین جہانیاں گردیزی صوبائی وزیر خوراک وزراعت ہیں جبکہ کبیروالا کے ایم این اے سید فخر امام وفاقی وزیر تحفظ خوراک زراعت ہیں. جلسے کے اختتام پر سید گروپ کےڈیرے پر پاکستان کسان اتحاد کے رہنماؤں کے اعزاز میں عشائیہ دیا گیا.


شیئر کریں: