نیکی مینج کی سعودی عرب میں پرفارمنس، مسلمانوں کی تنقید

شیئر کریں:

امریکی گلوکارہ نیکی مینج سعودی عرب کے کلچر شو میں پرفارم کریں گی۔ نیکی کی وجہ شہرت نیم عریاں ڈانس ہوتا ہے جس پر دنیا بھر سے سعودی عرب پر تنقید کی جارہی ہے۔ امریکی گلوکارہ نیکی مینج مختصر ترین لباس زیب تن کر کے گلو کاری سے دنیا بھر میں شہرت رکھتی ہیں۔ نیکی اب اٹھارہ جولائی کو مقدس سرزمین سعودی عرب میں پرفارم کرنے جارہی ہیں۔ جدہ سیزن کلچرل فیسٹیول کو چار چاند لگانے کے لیے انہیں بلایا گیا ہے۔

مختصر لباس والی امریکی گلوکارہ کی شرکت پر نا صرف دنیا بھر بلکہ سعودی عرب کے اندر سے بھی تنقید کی جارہی ہے۔ سعودی خواتین بھی حکومت کے دہرے معیار پر سوالات اٹھا رہی ہیں۔ سوشل میڈیا لوگ کہہ رہے ہیں کہ ایک طرف سعودی عرب اسلامی شعائر کی پابندی یقینی بنانے کے لیے سخت اقدامات کرتا ہے تو دوسری طرف برہنہ پروگرام کیوں؟ آخر حکمران جانا کہاں چاہتے ہیں؟ ۔ لوگ طرح طرح کے سوالات اٹھا رہے ہیں۔ کیا نیکی مینج کو برقعہ میں لایا جائے گا یا خواتین برقعہ میں شرکت کرنے آئیں گی اور اندر جا کر اتار دیں گی؟۔۔ سعودی عرب میں خواتین پر پردہ کرنا لازم ہے انہیں عبایا کے بغیر باہر نکلنے کی اجازت نہیں،، مگر یہ میوزیکل پروگرام سعودی حکومت کی پالیسیوں پرسوالیہ نشان چھوڑ گیا ہے۔۔ اس سے پہلے سعودی عرب میں ثقافت کے نام پر بڑے اقدام اٹھائے جا چکے ہیں۔ سعودی عرب کی تاریخ میں پہلی سینما بھی کھل چکے ہیں،، بلکہ امریکی کمپنیاں مزید سینما بھی بنا رہی ہیں،،یہی نہیں خطہ عرب میں بھی تبدیلی کی آثارنمایاں ہیں۔ اس کنسرٹ میں 16 سال سے کم عمر بچوں کے داخلے پر پابندی ہو گی۔ اس سے اندازہ لگایا جاسکتا ہے کہ یہ ڈانس کس نوعیت کا ہوگا۔


شیئر کریں: