نمل یونیورسٹی کے بعد پشاور یونیورسٹی کے طلبہ بھی فزیکل امحانات پر سراپا احتجاج

شیئر کریں:

فزیکل امتحانات کے خلاف پشاور یونی ورسٹی کے طلبا و طالبات نے پریس کلب کے سامنے دھرنا دیا۔
طلبہ نے فزیکل امتحان کے بائی کاٹ کا اعلان کر دیا طلبہ کہتے ہیں کلاسیں آن لاین ہوئیں تو پھر امتحان
بھی آن لائن ہی ہونا چاہیں۔
مڈ ٹرم میں فزیکل کلاسز کے ساتھ امتحان بھی فزیکل ہوا اب پشاور یونیورسٹی کے طلبہ سے امتیازی سلوک کیوں؟
مظاہرین کا کہنا ہے مذاکرات اب صرف مشیر برائے اعلی تعلیم کامران بنگش کے ساتھ ہوں گے خوراک کا بندوست
بھی کرلیا اب یہاں سے ہٹنے والے نہیں۔
کلاسز کے دوران کہا گیا تھا کہ کورونا ہے کیا اب فزیکل امتحان میں کورونا نہیں ہو گا؟
طلبہ کہتے ہیں اکنامکس اور سوشل سٹڈیز سمیت دیگر ڈیپارٹمنٹ آن لاین امتحانات لے رہے ہیں۔


شیئر کریں: