موبائل اور پیس میکر اب چارج کرنے کی ضرورت نہیں رہے گی

موبائل اور پیس میکر اب چارج کرنے کی ضرورت نہیں رہے گی. موبائل فون انسانی زندگی کا لازمی جز بن چکا
ہے. دنیا کے تقریبا ہر شہری کے ہاتھ میں موبائل اور کئی کے ہاتھ میں‌ موبائل چارج کرنے والا پاور بینک بھی
ساتھ ہی ہوتا ہے. اب بہت جلد بار بار چارجنگ سے نجات ملنےوالی ہے.
چین نے دعوی کیا ہے کہ 50 سال تک چارج رہنے والی موبائل کی بیٹری تیار کر رہا ہے جس کے بعد موبائل
رکھنے والوں‌کی زندگی میں راحت آجائے گی. چینی کمپنی Betavolt کے مطابق جوہری بیٹری کی تابکاری انسانی
جسم کو کوئی خطرہ نہیں پہنچاتی، جس سے اسے پیس میکر جیسے طبی آلات میں استعمال کے قابل بنایا جاتا ہے۔

چین میں ایک اسٹارٹ اپ نے نئی بیٹری بنائی ہے جس کا دعویٰ ہے کہ یہ 50 سال تک بغیر چارجنگ یا
دیکھ بھال کے بجلی پیدا کرسکتی ہے۔ دی انڈیپنڈنٹ کے مطابق یہ ایک ایٹمی بیٹری ہے جسے بیجنگ میں
قائم Betavolt نے تیار کیا ہے۔ Betavolt اس ماڈیول میں 63 آاسوٹوپس کو نچوڑنے میں کامیاب ہوا ہے
جو ایک سکے سے بھی چھوٹا ہے۔ یہ دنیا کی پہلی بیٹری ہے جس نے جوہری توانائی کے چھوٹے پن کو محسوس
کیا ہے۔
فون اور ڈرون جیسی کمرشل ایپلی کیشنز کے لیے بھی تجربات کیے جارہے ہیں اور جلد بڑے پیمانے پر ایسی بیٹری
تیار کی جائیں گی۔
بیٹا وولٹ ایٹم انرجی بیٹریاں متعدد منظرناموں میں دیرپا بجلی کی فراہمی کی ضروریات کو پورا کر سکتی ہیں. جیسے
ایرو اسپیس، اے آئی آلات، طبی آلات، مائیکرو پروسیسر، جدید سینسرز، چھوٹے ڈرونز اور مائیکرو روبوٹس شامل ہیں.