مسلم لیگ ن کے لیے چند سوالات

شیئر کریں:

تحریر: شہزادہ احسن اشرف شیخ
سابق چیئرمین و مینیجنگ ڈائریکٹر پی آئی اے
سابق وفاقی وزیر برائے صنعت و پیداوار

میرے مسلم لیگ ن کے کارکنوں سے اور ان افراد سے بھی چند سوالات ہیں جو اپنے آپ کو سیاسی طور پر غیر جانبدار قرار دیتے ہیں۔
آپ نے نواز شریف کے خلاف کتنی بار آواز اٹھائی جب وہ سرکاری عہدہ رکھتے تھے اور پی آئی اے کے طیاروں کو کھانا لانے کے لیے استعمال کرتے تھے؟
کیا آپ نے تب آواز اٹھائی تھی جب نوازشریف ترکی کے مشہور ریسٹورینٹ جانا بھول گئے تھے اور پی آئی اے کے جہاز کو صرف اسی وجہ سے ایک رات اور انتظار کرنا پڑا؟
کیا آپ نے تب آواز بلند کی تھی جب نواز شریف علاج کی غرض سے پی آئی اے کا طیارہ اپنے ساتھ لندن لے گئے تھے اور یہ طیارہ ایک ماہ تک لندن میں ہی کھڑا رکھا گیا؟
کیا آپ نے نواز شریف کے خلاف اس وقت آواز اٹھائی تھی جب وہ میگا کرپشن کے کیسز میں ملوث تھے اور وہ وزیراعظم ہوتے ہوئے دبئی کی ایک کمپنی میں ملازم بھی تھے؟
کیا آپ نے تب آواز اٹھائی تھی جب نواز شریف نے آئین پاکستان سے ختم نبوت قانون تبدیل کرنے کی کوشش کی تھی؟
کیا آپ نے تب آواز بلند کی تھی جب ماڈل ٹاون میں چودہ لوگ بے دردی سے قتل کر دیے گئے تھے؟
کیا آپ نے تب آواز اٹھائی جب نواز شریف سپریم کورٹ اور پاک فوج کے خلاف زہر اگل رہے تھے؟
کیا آپ نے تب آواز بلند کی جب بھارتی خفیہ ایجنسی را کے ایجنٹ نوازشریف کی شوگر ملز سے پکڑے گئے؟
کیا آپ نے نواز شریف سے سوال کیا کہ ان کے بچے صرف سولہ سترہ سال کی عمر میں ارب پتی کیسے بن گئے؟
کیا آپ نے سوال کیا جب 2013 میں اس سے 148 لوٹوں کو پارٹی ٹکٹ جاری کیے؟
کیا آُپ نے نواز شریف سے سوال کیا کہ اس نے مسلم لیگ کے رہنماوں کی پیٹھ کی چھرا کیوں کھونپا اور جنیجو دور میں ڈکٹیٹر سے ہاتھ کیوں ملایا؟
کیا آپ نے اس سے پوچھا کہ اس نے آئی ایس آئی سے پیسے لے کر بے نظیر بھٹو کی حکومت کے خلاف تحریک کیوں چلائی؟
کیا آُپ نے اس سے پوچھا کہ اس نے حسین حقانی کو استعمال کر کے بے نظیر بھٹو کے کردار کو گندہ کرنے کے لیے تحریک کیوں چلائی؟

کیا آُپ نے اس سے پوچھا کہ یہ ایک ڈکٹیٹر سے ڈیل کر کے ملک سے باہر کیوں بھاگ گیا اور پارٹی کے لوگوں کو ملک میں تنہا کیوں کیوں چھوڑا؟
کیا آپ نے اس سے پوچھا کہ جب کبھی اس کے خاندان کے لوگوں کو نزلہ اور زکام بھی ہو تو وہ برطانیہ کیوں بھاگتے ہیں؟
کیا آُپ نے نواز شریف سے کبھی پوچھا کہ اس نے کئی بار حکومت میں ہونے کے باوجود ملک میں ایک بھی ڈیم کیوں نہیں بنایا؟
کیا آپ نے کبھی اس سے سوال کیا کہ اس کی حکومت کے پانچ سال میں کتنا قرضہ لیا گیا؟
کیا آُپ نے اس سے پوچھا کہ اس نے میٹرو کو یونیورسٹیوں اور اسپتالوں پر کیوں ترجیح دی؟ اور اس نے پولیس اور بیوروکریسی کو سیاست سے پاک کیوں نہیں کیا؟
گزشتہ دو سال سے عدالتیں اس کی دولت کا حساب مانگ رہی ہیں۔ اس کی منی ٹریل کہاں ہے؟
ایک نااہل سابق وزیراعظم درجنوں گاڑیوں کا پروٹوکول، ٹیکس ادا کرنے والوں کے پیسوں سے سیکیورٹی کیوں لے رہا ہے؟ جبکہ دیگر سابق وزرا اعظم کو یہ سہولیات میسر نہیں۔
پنجاب میں مقامی حکومتوں کا سسٹم کہاں ہے؟
آج تک اس نے بھارتی جاسوس کلبھوشن یادیو پر منہ کیوں نہیں کھولا؟
اس نے اپنے دور حکومت میں وزیرخارجہ کیوں تعینات نہیں کیا؟ جس کی وجہ سے دنیا میں دشمن کا ایجنڈا پروان چڑھا اور ہم دنیا میں تنہا ہوئے۔
کیا آپ نے اس سے سوال کیا کہ رات کی تاریکی میں یہ جندال اور مودی سے خفیہ ملاقاتیں کیوں کرتا تھا؟
کیا آپ نے کبھی اس سے پوچھا کہ یہ کئی بار بھارت گیا لیکن اس نے مقبوضہ کشمیر کے حریت رہنماوں سے کیوں کبھی ملاقات نہیں کی؟
کیا آپ نے اس سے پوچھا کہ برطانوی شہریت کے حامل اس کے بیٹے دورہ بھارت کے دوران اس کے ساتھ کس حیثیت سے گئے؟ ان کا اس دورے کے دوران کیا کردار رہا اور وہ کس سے ملاقاتیں کرتے رہے؟
کیا آپ نے کبھی سوال کیا کہ مریم نواز کی اس کی بیٹی ہونے کے علاوہ کیا قابلیت تھی جو اسے ایک سو ارب فنڈ کی سربراہی دی؟
کیا آپ نے اس نے پوچھا کہ اس نے نجم سیٹھی کو پی سی بی کا چیئرمین کیوں لگایا حلانکہ نجم سیٹھی کا تو کرکٹ کا کوئی تجربہ بھی نہیں۔
کیا آپ نے اس سے سوال کیا کہ اس نے فاروق بندیال جیسے لوگوں کو پارٹی ٹکٹ کیوں دیا؟
کیا آپ نے اس سے پوچھا کہ یہ پاکستان اسٹیل مل کو کیوں نہیں چلا سکا حلانکہ اس کا اپنا اسٹیل کا کاروبار منافع میں چل رہا ہے۔
کیا آپ نے اس سے پوچھا کہ یہ اس پی آئی کو اپنے پاوں پر کھڑا کیوں نہ کرسکا جو دنیا کی کئی ایئرلائنز کی ماں کا درجہ رکھتی ہے حلانکہ شاہد خاقان عباسی کی ایئر لائن ترقی کر رہی ہے۔
اس کے علاوہ بھی کئی جواب طلب سوالات ہیں لیکن ادھر رکتے ہیں۔
میں مسلم لیگ ن کے اسپورٹرز، تجزیہ کاروں، صحافیوں، سول سوسائٹی کے علمبرداروں، اسٹیبلشمنٹ کے خلاف بولنے والوں اور آپ سے درخواست کرتا ہوں کہ آپ کو اس بارے میں بھی بات کرنی ہوگی اور اس گندگی پر بھی سوال اٹھانے چاہیے۔
میں آپ کے منطقی سوالات کا خیر مقدم کروں گا
شہزادہ احسن اشرف شیخ


شیئر کریں: