محمد احسن انتو کی گرفتاری قابل مذمت ہے،علی رضا سید

شیئر کریں:

چیئرمین کشمیرکونسل ای یو علی رضا سید نے مقبوضہ کشمیر میں انسانی حقوق کے علمبردار محمد احسن انتو کی گرفتاری کی مذمت کی ہے۔
واضح رہے کہ انٹرنیشنل فورم فار جسٹس اینڈ ہیومن رائٹس جموں و کشمیر کے چیئرمین محد احسن انتو کو گذشتہ روز سری نگر میں پولیس نےحراست میں لیا ہے۔
برسلز سے جاری ہونے والے اپنے ایک بیان میں چیئرمین کشمیرکونسل ای یو علی رضا سید نے کہاکہ محمد احسن انتو ایک ممتازکشمیری مدبر اور دانشور ہیں اور مقبوضہ کشمیر میں انسانی حقوق کے فعال علمبردار تصور کئے جاتے ہیں۔ ان کا جرم یہ ہے کہ وہ بھارتی مظالم کی نشاندہی کرتے ہیں اور بھارتی ظلم و ستم کے خلاف آواز بلند کرتے ہیں۔
انہوں نے کہاکہ بھارت ظلم و تشدد جیسے ظالمانہ ہتھکنڈوں کے ذریعے کشمیریوں کی تحریک کو دبا نہیں سکتا۔

چیئرمین کشمیرکونسل ای یو علی رضا سید نے مزید کہاکہ ہم مقبوضہ کشمیر کے عوام پر بھارتی مظالم کو عالمی سطح پر بے نقاب کرتے رہیں گے۔
انہوں نے کہاکہ انسانی حقوق کے عالمی اداروں کو مقبوضہ کشمیر میں جاری بھارتی تشدد کے خلاف آواز بلند کرنی چاہیے۔
یادرہے کہ احسن انتو کا شمار ان شخصیات میں ہوتا ہے جو وقتا فوقتا عالمی سطح پر کشمیریوں کے حق می٘ں اور بھارتی ظلم و ستم کے خلاف آواز بلند کرتے رہتے ہیں۔ وہ برسلز میں کشمیر کونسل ای یو کے بھارتی مظالم کے خلاف احتجاجی مظاہروں سے فون پر بھی خطاب کرچکے ہیں۔
علی رضا سید نے احسن انتو، خرم پرویز اور دیگر کشمیری شخصیات کی فوری رہائی کا مطالبہ کیا ہے۔


شیئر کریں: