ماحولیاتی آلودگی کے خلاف اسلام آباد سے خنجراب تک پیدل سفر

شیئر کریں:

گلگت بلتستان سے معین وجی

ملک میں سیاحت کو ترقی دینے اور ماحولیاتی آلودگی کے حوالے سے شعور دینے کے لئے فائزہ اور طوبی نے ایک نیا ریکارڈ اپنے نام کرلیا۔

اسلام آباد اور خانیوال سے تعلق رکھنے والی ان باہمت لڑکیوں نے وہ کر دکھایا جو کوئی مرد بھی اج تک نہیں کرسکا۔

خانیوال سے تعلق رکھنے والی طوبی اور اسلام اباد سے فائزہ نے اپنے دو دوستوں کے ہمراہ ایک نیا ریکارڈ بنانے کے لئے گلگت نکل پڑے 4 لوگوں پر مشتمل یہ گروپ اسلام آباد سے گلگت پہنچا اور پیدل سفر کرکے 280 کلو میٹر کا سفر طے کرکے پاک چائینہ بارڈر خنجراب ٹاپ پہنچنا ان کی منزل تھی نومبر کے سخت سردی میں انھوں نے اس سفر کا اغاز گلگت سے کیا.

مسلسل 8 دن میں 280 کلو میٹر سفر کرکے یہ گروپ بالاخر خنجراب ٹاپ پہنچ گیا اس گروپ نے پاکستان کا پرچم دوست ملک چائینہ کے اعلی حکام کے حوالے کردیا اور سجدہ شکر بجا لایا

ان دونوں لڑکیوں کا کہنا ہے کہ ان کے اس سخت سردی کے موسم میں یہ سفر نہ صرف ایک ریکارڈ بنانے کے لئے تھا بلکہ پوری دنیا کو یہ پیغام دینا تھا کہ یہ علاقہ ایک پر امن علاقہ ہے جہاں پر لڑکیاں بھی دن رات پیدل اکیلے سفر کر سکتی ہے اور اس سے بھی بڑھ کر یہاں کے لوگ بہت ہی زیادہ مہمان نواز ہے

فائزہ اور طوبی کا کہنا ہے کہ اس دورے کا مقصد نہ صرف ونٹر ٹورزم کو فروغ دینا ہے بلکہ پوری دنیا میں بڑھتی ہوئی موحولیاتی الودگی کے حوالے سے عوام کو شعور و اگاہی بھی دینا ہے

ان کا کہنا یے کہ گلگت بلتستان دنیا میں کسی جنت سے کم نہیں ہے اور یہاں کے مہمان نواز لوگ پاکستان میں کہیں پر بھی نہیں ہے

ان کا یہ پیغام ہے کہ ہماری طرح دوسری لڑکیاں اور نوجوان بھی اس طرح مہم جوئی کرسکتے ہیں اور پوری دنیا میں اس علاقے میں سیاحت کے فروغ کے لئے اپنا بھرپور کردار ادا کرسکتے ہیں.


شیئر کریں: