قراقرم یونی ورسٹی کے طلبہ نے مطالبات کی منظوری تک دھرنا دے دیا

شیئر کریں:

قراقرم یونیورسٹی کے طلبہ نے فیسوں کی معافی کے لیے شاہراہ قراقرم پر دھرنا دے ڈالا۔
طلبہ ریلی کی شکل میں احتجاج کرتے ہوئے شاہراہ قراقرم دنیور پہنچے۔
قراقرم ہائی وے دنیور چوک میں طلبہ کا احتجاج دھرنے کی شکل اختیار کر گیا۔
طلبہ نے کہا ہے قراقرم یونی ورسٹی انتظامیہ غریب طلبہ پر ظلم بند کرے۔

طلبہ نے کہا وفاقی وزیر علی آمین گنڈاپور سات کروڑ کی گرانٹ کا اعلان تو کرتے ہیں لیکن ابھی تک اپنے
اعلان پر عملدرآمد نہیں کراسکے۔
طلبہ نے اپنے مطالبات کے پورے ہونے تک شاہراہ قراقرم بند رکھنے کا اعلان کر دیا اور دھرنا جاری رہے گا۔
گلگت بلتستان کے طلبہ احتجاج ایسے موقع پر کر رہے ہیں ملک بھر کی سیاسی جماعتوں کے رہنما گلگت
میں موجود ہیں۔
گلگت بلتستان اسمبلی کے انتخابات بھی 15 نومبر کو ہونے جارہے ہیں۔
بدقسمتی سے ایسے موقع پر طلبہ کی داد رسی کرنے والا کوئی نہیں۔
یاد رہے طلبہ اس سے پہلے بھی کئی بار مظاہرے اور دھرنے دے چکے ہیں اور ہر مرتبہ یقین دہانیاں
کرادی جاتی ہیں۔


شیئر کریں: