فیس شیلڈ ماسک سے کیسے بہتر ہیں؟

شیئر کریں:

کورونا وائرس سے بچنے کے لیے فیس ماسک کو انتہائی اہم ہتھیار سمجھا جاتا ہے۔
امریکا سمیت دنیا کے دیگر کئی ممالک نے عوامی مقامات پر جانے کے لیے فیس ماسک کو پہننا لازمی قرار دے رکھا ہے۔
کئی شہریوں کو فیس ماسک پہننا مشقلہ لگتا ہے کیوں کہ فیس ماسک کی وجہ سے سانس لینے میں دشواری کا سامنا کرنا پڑتا ہے۔

یونیورسٹی آف لوا کے پروفیسر ڈاکٹر ایلی کا کہنا ہے کہ فیس ماسک کی جگہ فیس شیلڈ کو بھی استعمال کیا جا سکتا ہے۔
ڈاکٹر ایلی انفیکشن ڈزیز کے ماہر ہیں ان کا کہنا ہے کہ وہ کئی ہفتوں سے عوامی مقامات پر صرف فیس شیلڈ استعمال کر رہے ہیں۔

ان کا کہنا ہے کہ فیس شیلڈ ماسک کی طرح انتہائی موثر ہے۔
ماسک کے مقابلے میں فیس شیلڈ کو استعمال کرنا انتہائی آسان ہے۔
فیس شیلڈ کو جراثیم سے پاک کرنا بھی آسان ہے۔

ڈاکٹر ایلی کا کہنا ہے کہ ان کی ٹیم نے اس بات پر ریسرچ کی ہے کہ آیا فیس شیلڈ وائرس کا پھیلاو روک سکتی ہے؟
ان کا کہنا ہے کہ اگر ماسک نہ بھی پہنا جائے اور صرف شفاف پلاسٹک کی چیف استعمال کی جائے تو
اس طرح سماجی دوری برقرار رہتی ہے۔

فیس شیلڈ سے شہری براہ راست ہوا میں سانس نہیں لے پاتے اور نہ ہی اپنے ہاتھ چہرے کو لگا پاتے ہیں۔
فیس شیلڈ کو جراثیم کش محلول سے صاف کر کے بار بار استعمال کیا جاسکتا ہے ۔
وبائی امراض کے ماہر ڈاکٹر ایلی کا کہنا ہے کہ وہ ریسرچ کے بعد اس نتیجہ پر پہنچے ہیں کہ فیس شیلڈ ماسک سے کہیں بہتر ہے۔


شیئر کریں: