فلم انڈسٹری زوال پذیر

شیئر کریں:

تحریر وجیہہ الحسن

ایک زمانہ تھا کہ دنیا بھر کی طرح پاکستان میں بھی ایک اچھی اور معیاری فلمیں بنا کرتی تھی لوگ اپنی فیملیز کے ساتھ پاکستان کے سنیما گھروں میں جا کر سٹوریکل فلمیں دیکھا کرتے تھے اور بہت زیادہ لطف اندوز ہوتے تھے کیونکہ اس دور میں ایکٹنگ، فلم کا سکرپٹ، موسیقی، شوٹنگ ، رومانس وغیرہ تمام چیزوں کے معیار کا خیال رکھا جاتا تھا کہ عوام کو کیا چیز پسند ائے گی اور کیا چیز نہیں پسند آئے گی، اج سے چالیس سال پہلے ہالی ووڈ، بالی ووڈ، لالی ووڈ کے مابین فلم بینی کے مقابلے ہوتے تھے جس میں پاکستانی انڈسٹری جس کو لالی ووڈ کہا جاتا ہے نمبر ون پر رہی لالئ ووڈ میں ایسے ایسے فنکار پیدا ہوئے جن کی ایکٹنگ کو بھلائے نہیں بھولا جاتا پاکستانی انڈسٹری میں چاکلیٹ ہیرو کا خطاب لینے والے وحید مراد، محمد علی، شاہد، مصطفی قریشی، سلطان راہی،ندیم سمیت دیگرز فنکاروں نے دنیا میں اپنی ایکٹنگ کے جوہر منوائے اسی طرح پاکستان کی فلم انڈسٹری نے سپر ہٹ فلمیں بھی بنائی جن کی کامیابی کی گونج پوری دنیا میں گونجی جیسے منا بگڑا جائے،
چوڑیاں، سلطان راہی کی مولا جٹ، میرا نام ہے محبت، ارمان، آئینہ، زینت، سمیت سیکنڑوں ایسی فلمیں بنئی جنھوں نے باکس آفس پر راج کیا لالی ووڈ میں خواتین فنکاراوں نے بھی خوب راج کیا جس میں، بابرہ شریف، نیلی، دیباء، انجمن، لیلی، ریما سمیت دیگر فنکار شامل ہیں مگر پھر آہستہ آہستہ پاکستان کی فلم انڈسٹری زوال پذیر ہونا شروع ہو گئی اچھی اور معیاری فلمیں بننا بند ہو گئی ملک میں بم دھماکے ہونا شروع ہو گئے خاص طور پر سنیما گھروں میں دھماکے ہوتے تھے فلموں پر پیسہ لگانے والے بھی خاموش ہو گئے لوگ سینما گھروں میں جاتے ہوئے ڈرتے تھے فرقہ واریت نے ایسا جنم لیا کہ فلم اسٹار کو دن دھاڑے قتل کرنا شروع کر دیا جس کا نتیجہ پاکستان کی عوام ایک اچھی اور سستی تفریح سے محروم ہونے لگے وقت گزرتا رہا فلمیں بنتی رہی اور فلاپ ہوتی رہیں معیاری فلمیں نہ بننے کی وجہ سے فنکاروں نے کام کرنا چھوڑ دیا، پیسہ نہ ہونے کی وجہ سے ہدایتکاروں نے فلمیں بنانا چھوڑ دی، پاکستانی حکومت نے بھی فلم انڈسٹری کو سہارا نہ دیا جس کے بعد باکس آفس سے لالئ ووڈ کا نام و نشان تک مٹ گیا اور ایک وقت ایسا اگیا کہ بڑے بڑے فنکار بھیک مانگنے پر مجبور ہو گئے پاکستان کے بڑے بڑے سنیما گھر بھی بند ہو گئے اگر اج بھی حکومت پاکستان فلم انڈسٹری کو سپوٹ کرے تو ہو سکتا ہے ایک بار پھر لالی ووڈ کا نام روشن ہو جائے اور لوگوں کو اچھی اور معیاری تفریح مہیا ہو سکے


شیئر کریں: