فاتح کابل مولوی حمداللہ داعش حملہ میں‌ شہید

شیئر کریں:

طالبان رہنما اور فاتح کابل مولوی حمداللہ کو آج دارلحکومت کابل میں داعش کے دہشت گردوں نے
حملہ کر کے شہید کر دیا ہے.

مولوی حمداللہ رحمانی کابل میں بدری فورس 313 کے سربراہ تھے اور 15 اگست کو وہ پہلے طالبان
رہنما ہیں جو اشرف غنی کے فرار کے بعد صدارتی محل میں داخل ہوئے تھے۔

کابل پر طالبان کے قبضہ کے بعد سے دارلحکومت سمیت مختلف شہروں میں‌ دہشت گردوں‌ کی
کارروائیاں جاری ہیں.
گزشتہ روز 2 نومبر کو کابل ہی میں آرمی اسپتال پر دہشت گردوں کے حملے میں‌ 20 سے زائد
افراد ہلاک اور درجنوں زخمی ہوئے تھے.
افغانستان پر دوبارہ طالبان کا تسلط قائم ہونے کے بعد سے حالات میں‌ جس بہتری کی امید ظاہر کی
جارہی تھی ایسا مشکل ہی دیکھائی دے رہا ہے.
داعش مسلسل افغانستان اور طالبان کے لیے خطرے کی گھنٹی بنی ہوئی ہے. کابل اور اس کے اردگرد
ہزارہ برادری پر حملے بھی معمول بن چکے ہیں لیکن طالبان قیادت کو نشانہ بنائے جانے سے
افغانستان کا مستقبل ایک اور خانہ جنگی کا اشارہ دینے لگا ہے.


شیئر کریں: