غریب ملک کے چھوٹے شہر کی شادی میں ڈالرز کی برسات

شیئر کریں:

پاکستان کے صوبہ پنجاب کی شادیاں پورے ملک کی طرح دنیا بھر میں توجہ کا مرکز بن چکی ہیں۔
پنجاب میں اکثر شادیوں کی تقریبات میں بینڈ باجے کی دھنوں پر دلہا کے یار دوست اور اہل خانہ ڈالر برساتے ہیں۔
گوجرانوالہ میں بھی ایسی شادی ہوئی جس میں پاکستانی نوٹوں کے ساتھ ساتھ ڈالرز کی بارش کی گئی۔

اسٹیل کے تاجر کی شادی پر ملکی و غیر ملکی کرنسی نوٹ لاکھوں میں نچھاور کیے گئے۔
تاجر ثناء اللہ کے بیٹے ہارون کی شادی میں شامل باراتی بھی نوٹ لوٹتے رہے۔
ایک ایک ہزارکے نوٹ اور ڈالرز پکڑنے والوں کا رش لگ گیا، دلہے کے بھائی اور عزیزواقارب ایک
گھنٹے تک نوٹ نچھاور کرتے رہے۔

نمائندہ کے مطابق دلہا کی گاڑی پر نوٹ لٹائے جاتے رہے لیکن نوٹ لوٹنے والے کم پڑ گئے تھے۔
بیرونی قرض تلے دبے ملک کے چھوٹے شہر کی شادی میں ڈالرز لٹانے کی ویڈیو کچھ ہی دیر میں
سوشل میڈیا پر وائرل ہو گئی۔

لوگوں کا کہنا ہے ایک طرف حکومت عوام پر مہنگائی کا بوجھ لادے جاری ہے اور دوسری جانب
ملک میں ایسے بھی لوگ ہی جو ایک ایک ہزار کے نوٹوں کے ساتھ امریکی ڈالرز بھی لٹا رہے ہیں۔
ملک میں مساوی ذرائع آمدنی نہ ہونے کی وجہ سے امیر اور غریب میں تفریق بہت زیادہ ہو چکی
ہے یہی وجہ معاشروں میں تقسیم کا سبب بنتی ہے۔

اسی اصراف کی وجہ سے معاشرے کا پسا ہوا طپقہ اپنی محرومی چھپانے کے لیے بعض اوقات منفی
سرگرمیوں میں ملوث ہو جاتا ہے۔
اکثر دیکھا یہ گیا ہے کہ جتنے بھی بڑے بڑے بزنس کے مالک ہیں وہ اپنی تقریبات میں اسی طرح پیسے لٹاتے ہیں۔
شادی کی تقریبات میں کروڑوں روپے خرچ کرتے ہیں لیکن اپنی فیکٹری اور بزنس میں کام کرنے والے
ملازمین کی تنخواہیں وقت پر نہیں دیتے اور نہ ہی مہنگائی کے حساب سے الاؤنس دیتے ہیں۔


شیئر کریں: