عدلیہ،اراکین اسمبلی اور سرکاری اداروں میں کرپشن زیادہ بڑھ گئی

شیئر کریں:

ٹرانسپرنسی انٹرنیشنل نے پاکستان میں کرپشن کا اسکور اور ریٹنگ 8 شعبوں میں کرپشن کے تاثر کی بنیاد پر کی گئی ہے بدقسمتی سے کسی ایک بھی شعبے میں ایک پوائنٹ کی بہتری نہیں ہوئی الٹا سرکاری شعبے میں کرپشن میں 5 درجے اضافہ دیکھا گیا۔
ٹرانسپرنسی انٹرنیشنل کے مطابق کرپشن 2020 کے انڈیکس میں پاکستان کا اسکور اور ریٹنگ 8 کیٹیگریز میں مختلف عالمی اداروں کی تازہ ترین رپورٹس کی بنیاد پر کی گئی ہے،، سکور میں سب سے زیادہ تنزلی وڑایٹی آف ڈیموکریسی کیٹیگری میں ہوئی اس کیٹیگری کا اسکور چار شعبوں، سرکاری شعبے میں کرپشن ، قانون سازوں کی کرپشن، ایگزیکٹو کرپشن انڈیکس اور عدلیہ میں کرپشن کی صورتحال پر مرتب کیا گیا۔
2020 میں اس کیٹیگری مین پاکستان کا اسکور صرف 22 رہا جو 2019 میں 27 تھا۔ اس کے علاوہ ورلڈ جسٹس پروگرام، قانون کی حکمرانی انڈیکس میں پاکستان کا 2020 کا اسکور 25 رہا،، جو 2019 میں 27 تھا۔
رپورٹ کے مطابق باقی تمام کیٹیگریز میں پاکستان کے اسکور میں کوئی تبدیلی نہیں ہوئی جتنی کرپشن پہلے تھی وہ اب بھی ہے۔


شیئر کریں: