عبداللہ عبداللہ کا دورہ پاکستان افغانستان میں نئے دور کا آغاز

شیئر کریں:

افغانستان میں صدر ڈاکٹر اشرف غنی کے بعد سب سے بڑا سرکاری عہدہ عبداللہ عبداللہ کے پاس ہے۔
عبداللہ عبداللہ اعلی سطح وفدکے ہمراہ اسلام آباد پہنچے ہیں۔
افغان عمل کے لیے یہ تین روزہ سرکاری دورہ انتہائی اہمیت کا حامل قرار دیا جارہا ہے۔
ان کے دورہ سے پہلے طالبان کا اعلی سطح وفد بھی پاکستان کا دورہ کر چکا ہے۔

عبداللہ عبداللہ کا یہ دورہ بھی افغانستان میں قیام امن کو آگے بڑھانے کے اسی سلسلے کی کڑی ہے۔
پاکستان کی کوششوں سے طالبان اور افغان حکومت مزاکرات کی میز پر آئے ہیں۔
دوحہ مزاکرات میں تعطل دور کرانے میں پاکستان کے کردار کو ایک بار پھر سے انتہائی اہمیت
دی جارہی ہے۔
پہلے بھی پاکستان ہی نے طالبان کو مزاکرات کے لیے تیار کیا تھا۔
افغانستان میں امن پاکستان کے لیے اور پورے خطے کے لیے ناگزیر ہے۔
پاکستان میں اب تک 27 لاکھ سے زائد افغان مہاجرین آباد ہیں ان کی واپسی بھی افغانستان کے
حالات میں بہتری سے ہی مشروط ہے۔
عبداللہ عبداللہ سے متعلق عام خیال ہے کہ وہ بھارت کے بہت زیادہ قریب ہیں لیکن یہ دورہ انہیں
پاکستان کو قریب سے سمجھنے میں مددگار ثابت ہو گا۔
اس دورہ سے انہیں کھرے اور کھوٹے میں بھی تمیز کرنے میں آسانی ہو گی۔


شیئر کریں: