صنفی بنیاد پر قرنطینہ کا فیصلہ

شیئر کریں:

کورونا وائرس کی وبا پر قابو پانے کے لیے تمام ممالک اپنی اپنی استعداد کے مطابق اقدامات کر رہے ہیں۔
جنوبی امریکا کے ملک پیرو کی حکومت نے صنفی بنیاد پر قرنطینہ لاگو کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔
خواتین اور مرد حضرات اب الگ الگ خریداری کے لیے گھروں سے باہر نکل سکیں گے۔
پیرو نے وائرس کا پھیلاؤ روکنے کے کرفیو لگایا ہوا ہے اور ضروری اشیا کی خریدادی کے لیے کرفیو میں نرمی کی جاتی ہے۔
کرفیو میں نرمی کے دوران مردحضرات برق رفتار سے اشیا ئے خور و نوش کی خریداری کر لیتے ہیں لیکن خواتین کو مشکلات کا سامنا ہوتا ہے۔
خواتین کی آسانی کے لیے منگل ،جمعرات اور ہفتے کو اب صرف وہ ہی خریداری کر سکیں گی۔
اسی طرح مرد حضرات پیر،بدھ اور جمعے کو اشیائے ضروریہ خرید کر گھر لاسکیں گے۔
پیرو میں تقریبا ڈیڑھ ہزار لوگ وائرس سے متاثر اور 55 اموات ہو چکی ہیں۔
تین کروڑ 30 کی آبادی والے ملک میں اگر یہ تجربہ کامیاب ہو گیا تو دیگر ممالک بھی اس پر عملدرآمد کرائیں گے۔
پراو کے ساتھ ہی ایکواڈور اور کولمبیا کی سرحدیں بھی لگتی ہیں۔


شیئر کریں: