شرجیل کی دھواں دھار سنچری سے واپسی

شیئر کریں:

پاکستان کرکٹ ٹیم کے سابق اوپنگ بیٹسمین شرجیل خان کی ڈھائی سال بعد کرکٹ میں واپسی ہو گئی ہے۔ کلب کرکٹ کی اجازت ملتے ہی بائیں ہاتھ کے اوپنگ بیٹسمین شرجیل نے پہلے ہی میچ میں شائقین کو حیرت زدہ کردیا۔ حیدرآباد سے تعلق رکھنے والے نوجوان کھلاڑی شرجیل نے کراچی کے علاقے گلبرگ میں ٹی ایم سی کرکٹ گراونڈ پر چوکوں اور چھکوں کی برسات کردی۔
02D7042A-B007-4784-8BF4-045A8DAD055A
شرجیل نے صرف 49 بالز پر 7 چھکوں اور 12 چوکوں کی مدد سے 116 رنز جوڑے۔ شرجیل نے پانچ بار بالز گراونڈ کے باہر پھینکی اور دو بالز تو ملی ہی نہیں۔ اس سے اندازہ لگایا جاسکتا ہے کہ انہوں نے لمبی غیر حاضری کے باوجود کس قدر خود کو فٹ رکھا ہوا ہے۔ ان کے ساتھ معین خان کے صاحبزادے اعظم خان نے بھی دھواں دھار اننگ کھیلی اور صرف 47 بالز پر 114 رنز بنائے جس میں 10 چھکے اور 8 چوکے شامل تھے۔ دونوں سنچریز کی بدولت دی پروفیشنلز نے مقررہ بیس اوورز میں صرف دو وکٹ پر 271 رنز بنائے۔ مخالف ٹیم کاشان کرکٹ اکیڈمی کے کھلاڑی پہاڑ جیسا اسکور دیکھتے ہی بیٹنگ شروع کرنے سے پہلے ہی حوصلے ہار چکے تھے۔ پوری ٹیم 17.2 اوورز میں صرف 119 رنز پر ڈھیر ہوگئی۔ شرجیل نے بہترین بیٹُگ کی طرح باؤلنگ میں بھی اعلی کارکردگی کا مظاہرہ کیا اور تین وکٹ لیں۔

شرجیل خان کی آل راؤنڈ پرفارمنس نے شائقین کرکٹ کو ایک بار پھر سے بہترین کرکٹ سے لطف اندوز ہونے کا موقع فراہم کیا۔ شائقین نے امید ظاہر کی ہے کہ شرجیل خان جلد قومی ٹیم میں جگہ بنانے میں کامیاب ہو جائیں گے۔


شیئر کریں: