سسر کی جانب سے بہو کو اپنی حوس کا نشانہ بنانے کی کوشش

شیئر کریں:

ننکانہ سے ملک جعفر

پاکستان کا معاشرہ اپنی تاریخ میں بدترین پستی کی طرف تیزی سے گر رہا ہے۔
آئے روز کہیں نہ کہیں سے بچوں اور بچیوں کے ساتھ زیادتی اور خواتین کی آبرو ریزی کے
واقعات سامنے آتے رہتے ہیں۔

اب پنجاب سے ایک اور بھیانک واقعہ سامنے آگیا جہاں سسر نے بیٹی کی مافق اپنی بہو کی
عزت سے کھیلنے کی کوشش کی ہے۔

“ننکانہ صاحب میں آسمان گرا اور نہ ہی زمین پھٹی کیونکہ بے ضمیر شخص نے اپنے بیٹے
کی بیوی پر بری نظر ڈالی۔

بچیکی کے محلہ ادریس ٹاؤن کی رہائشی آسیہ بی بی کہتی ہیں اس کی شادی کچھ ماہ قبل
ہی اپنے ماموں اکرم کے بیٹے محمد بوٹا کے ساتھ ہوئی۔

بوٹا محنت مزدوری کے لیے فیصل آباد چلا گیا اور وہ اپنے سسر کے ساتھ رہنے لگی۔
آسیہ نے الزام لگایا کہ 28 ستمبر کی رات اس کا سسر اکرم زبردستی اسے اندر کمرے میں لے گیا۔

کمرہ میں زیادتی کرنے کی کوشش کی جس پر میں نے شور مچا دیا اور اپنی عزت بچائی۔
آسیہ بی بی کی تحریری درخواست پرپولیس تھانہ بڑا گھر نے ملزم کے خلاف مقدمہ درج کر
کے اسے گرفتارکر لیا۔

مقدمہ کے تفشیشی انجم رضوان چیمہ کے مطابق کیس میں انصاف کے تمام تقاضے پورے کئے جائیں گے۔
متاثرہ لڑکی آسیہ نے اپنی والدہ کے ہمراہ بتایا کہ محمد اکرم اس سے قبل بھی ایسی حرکتیں کر چکا ہے۔

انہوں نے الزام لگایا کہ ملزم اور اس کی پشت پناہی کرنے والے باثر افراد مقدمہ کی پیروی سے روکنے
کے لئے انہیں سنگین نتائج کی دھمکیاں دے رہے ہیں۔۔

جان کو خطرہ کے پیش نظر انہوں نے ڈسٹرکٹ پولیس آفیسر اسماعیل کھاڑک سے مطالبہ کیا ہے کہ
ملزم کے خلاف سخت قانونی کارروائی عمل میں لائی جائے اور انہیں تحفظ فراہم کیا جائے۔

پولیس ابھی واقعہ کی تفتیش کر رہی ہے کہ آیا بہو کسی وجہ سے تو الزام عائد نہیں کر رہی ہے۔


شیئر کریں: