دبئی سمیت متحدہ عرب امارات میں واٹس اپ کالز کی اجازت

شیئر کریں:

متحدہ عرب امارات میں بھی اب واٹس اپ، اسکائپ اور دیگر انٹرنیٹ ایپلی کیشنز پر فون کالز کی جاسکیں
گی۔ ابتدائی طور پر یہ کالیں بعض مخصوص اسمارٹ فونز پر ہی جاسکیں گی۔ دبئی سمیت متحدہ عرب
امارات کی تمام ساتوں ریاستوں میں وائس آور انٹرنیٹ پروٹوکول سروس پر پابندی ہے لیکن اب ملک کے
کسی بھی کونے میں مقیم افراد پیڈ ایپلی کیشنز بوٹم ڈاؤن لوڈ کر کے اپنی مرضی سے جتنی چاہئیں انٹرنیٹ
کال کر سکتے ہیں۔

دبئی کا سائبر سیکیورٹی کا محکمہ واٹس اپ کالز کی سہولت فراہم کرنے کے لیے وقتا فوقتا کچھ وقت
کے لیے انٹرنیٹ پر اس کی سہولت بحال کر دیتا ہے تاہم امید کی جاسکتی ہے کہ مستقبل قریب میں
کچھ پابندیوں کے ساتھ یہ سروس عام کی جانے کی امید ہے۔

خیال رہے خلیج اور مشرق وسطی میں انٹرنیٹ کے ذریعے ٹیلی فون کالز پر اس دور جدید میں بھی پابندیاں
عائد ہیں۔ ان ریاستوں میں موبائل کالز بہت مہنگی پڑتی ہیں۔

پاکستان بھی اب دبئی کا 5 سالہ ویزہ حاصل کر سکتے ہیں

زہن میں رہے خلیج اور مشرق وسطی میں زیادہ تر افراد تارکین وطن ہیں۔ ان میں سے بیشتر بھارت، پاکستان،
بنگلہ دیش اور فلپائن سے تعلق رکھتے ہیں انہیں اپنے ممالک میں ٹیلی فون کال انتہائی مہنگی پڑتی ہے
اگر انٹرنیٹ کال سروس عام کردی جائے تو انہیں بھی اپنے اہل خانہ سے بات چیت کرنے میں آسانی ہو گی۔
اس کا اثر ان کی کارکردگی پر بھی مثبت ہی پڑے گا۔


شیئر کریں: