خیبرپختونخوا کے چوکیدار نے ایم فل کرکے تاریخ رقم کردی

شیئر کریں:

تعلیم حاصل کرنے کا جذبہ ہوتو حالات بھی رکاوٹ نہیں بن سکتے یہ بات خیبرپختونخوا کے چوکیدار نے ثابت کردی۔
خیبرپختونخوا کے ضلع خیبر سے تعلق رکھنے والے نور مرجان نے ایم فل کی ڈگری حاصل کرکے تاریخ رقم کردی۔
نور مرجان 2001 سے پشاور میں بحیثیت چوکیدار تعینات ہیں۔
شیخ زید اسلامک سینٹر میں چوکیدار کی ڈیوٹی سر انجام دیتے ہوئے
نور مرجان نے ملازمت کرنے کے ساتھ تعلیم کا سلسلہ جاری رکھا۔
اپنے فرائض سر انجام دیتے ہوئے پشاور کے چوکیدار نے ایم فل کی ڈگری حاصل کی۔

بیٹے نے ماں کے اعلیٰ تعلیم حاصل کرنے کا خواب پورا کرادیا

نور مرجان نے اسلامک اسٹیڈیز میں ایم کیا اور ان کے مقالے کا موضوع قبائلی
اضلاع کے رسم و رواج کا ہندوؤں اور سکھوں کے رسم و رواج کے ساتھ تقابلی جائزہ تھا۔
نور مرجان نے بتایا ہے کہ میں میٹرک کی بنیاد پر چوکیدار کی ملازمت پر لگا تھا
نور مرجان نے بتایا کہ اس نے چار سال تک سپرنٹنڈنٹ امتحانات کی ذمہ داری نبھائی۔
یونیورسٹی کے ہاسٹل میں کلرک کے فرائض بھی سر انجام دیے۔
چوکیداری کے دوران نورمرجان نے بی ایڈ اور ایم ایڈ بھی کیا ہے۔

سندھ میں وڈیرا شاہی تعلیم کی تباہی کی اصل ذمہ دار

نور مرجان نے بتایا کہ وہ میٹرک کے بعد چوکیداری کے طور پر بھرتی ہوئے تھے اور20 سال سے یہ ملازمت کر رہے ہیں۔
نور مرجان نے درخواست کی کہ انہیں ڈگری کے مطابق کوئی ڈیوٹی دی جائے۔
انہوں نے بتایا کہ میں نے بی ایڈ اور ایم ایڈ سمیت ایم فل بھی کیا ہے جو تعلیم کے شعبے سے تعلق رکھتا ہے۔
انہوں نے مطالبہ کیا ہے کہ ٹیچنگ کے شعبے میں ہی کوئی ملازمت دی جائے۔


شیئر کریں: