حکومت بانڈ کے بہانے تاوان لینا چاہتی ہے

شیئر کریں:

صدر مسلم لیگ ن شہبازشریف نے کہا ہے کہ حکومت نواز شریف کو بیرون ملک بھیجنے کے بدلے تاوان لینا چاہتی ہے۔نوازشریف سے متعلق حکومتی فیصلہ قوم کے سامنے ہے،مسلم لیگ ن کی ٹیم لاہور ہائی کورٹ میں موجود ہے،لاہور ہائیکورٹ میں میری جانب سے درخواست دائر کی جائےگی، امید ہےکہ عدالت جلد فیصلہ کرےگی،لاہور میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے شہباز شریف نے کہا کہ رات کو فی الفور فیصلہ کیا کہ عدالتوں کا دروازہ کھٹکھٹائیں گے،20دن سے حکومتی کھیل چل رہا ہے جو قابل مذمت ہے،نوازشریف کی صحت پر سنگ دلی اور تنگ نظری کا مظاہرہ کیا گیا،یہ لوگ انڈیمنٹی بانڈ کے بہانے تاوان لینا چاہتے ہیں،انڈیمنٹی بانڈ کی آڑ میں قوم کو ایک اور دھوکہ دینا چاہتے ہیں،نوازشریف اور میں نے اس مطالبے کو مسترد کیا ہے،شہباز شریف نے کہا کہ انڈیمنٹی بانڈ کی شرط ہرگز قبول نہیں،وزیراعظم بھاشن دیتے رہتے ہیں کہ این آر او نہیں دوں گا،عمران خان صاحب این آر او دے سکتے ہیں نہ لے سکتے ہیں، نوازشریف مشکل صورتحال کا مقابلہ کررہے ہیں،6جولائی 2018کوعدالتی فیصلہ آیا تو نوازشریف لندن میں اہلیہ کی تیمارداری کررہے تھے، فیصلہ آنے کے6دن بعد نوازشریف بیٹی کے ہمراہ پاکستان آئے،نوازشریف کو بیٹی کے ہمراہ اڈیالہ جیل میں قید کردیا گیا،کیا اس وقت نوازشریف نے انڈیمنٹی بانڈ دیاتھا؟ 2عدالتوں نے نوازشریف کی ضمانت منظور کی ہے، 3بار وزیراعظم رہنے والے شخص سےانڈیمنٹی بانڈ مانگا جارہا ہے،یہ چاہتے ہیں لوگوں کو بتائیں کہ نوازاور شہبازشریف سے7ارب روپے نکال لیے،عدالتوں نے انڈیمنٹی بانڈ کی شرط نہیں لگائی،حکومت میں بہت سے ایسے لوگ موجود ہیں جنہوں نے قرضہ معاف کرایا،عوام نوازشریف کی صحت اورحکومت سیاست کی فکر میں ہے،نوازشریف اس قوم کا سرمایہ ہیں،صدر مسلم لیگ ن نے کہاکہ حکومت کی سیاسی مکاری کی کوئی مثال نہیں ملتی،رات میں ڈاکٹر عدنان نے فون کیا کہ نوازشریف کے پلیٹ لیٹس 16ہزار تک پہنچ گئے، نوازشریف کو اسپتال منتقل کیا گیا تو اگلےپلیٹ لیٹس2ہزار تک پہنچ گئے تھے،معجزانہ طور پر نوازشریف کے جسم سے بلیڈنگ نہیں ہوئی، نوازشریف کی بیماری کو شٹل کاک بنادیا گیا ہے،ڈاکٹر شمسی کو ہم نے نہیں،حکومت نے بلایا تھا،عمران خان نے قوم کو گمراہ کرنے کی ایک اور سازش کی ہے،عمران نیازی چاہتے ہیں وہ قوم کو بتائیں دیکھا میں نے رقم نکلوالی،محکمہ داخلہ نیب اور نیب محکمہ داخلہ کی جانب گیند پھینک رہا ہے،ہم سب کچھ کرنے کو تیار ہیں لیکن انڈیمنٹی بانڈ کی ضرورت نہیں،حکومت نے انسانی مسئلے کو سیاسی رنگ دےدیا،خدارا نوازشریف کی صحت پر سیاست کرنا بند کردیں،پوری قوم نوازشریف کی صحت کےلیے دعاگو ہے، قوم کسی حادثے کی متحمل نہیں ہوسکتی،یہ لوگ جان بوجھ کے دیر کررہے ہیں اگر میاں نواز شریف کو کچھ ہوا تو عمران خان نیازی اس کا ذمہ دار ہوگا ۔


شیئر کریں: