جی ڈی اے امیدوار پی ایس 110 بتول فاطمہ کی انتخابی مہم

جی ڈی اے امیدوار پی ایس 110 بتول فاطمہ کی انتخابی مہم

گرینڈ ڈیموکریٹک الائینس کی کراچی میں صوبائی حلقہ پی ایس 110 سے امیدوار بتول فاطمہ کی انتخابی مہم زور و شور سے
جاری ہے۔ بتول فاطمہ نے کارکنوں کے ساتھ پی این ٹی کالونی میں گھر گھر جاکے ملاقاتیں کیں۔علاقے میں
کارنر میٹنگ بھی کی۔
اس موقع پر بتول فاطمہ نے میڈیا سے علاقے کے عوام سے بات کرتے ہوئے فنگشنل لیگ کے سربراہ پیر
صاحب پگارا کا پیغام عام کیا۔
بتول فاطمہ نے کہا جی ڈی اے نے اپنے منشور میں لڑکیوں کی تعلیم پر خصوصی توجہ دی ہے۔ بارہویں کلاس تک
لازمی اور مفت تعلیم فراہم کی جائے گی۔ ملک میں اس وقت ایک کروڑ سے زائد لڑکیاں اسکول نہیں جارہی ہیں۔
ہم تمام لڑکیوں کو تعلیمی اداروں تک لائیں گے اور قومی دھارے میں شامل کیا جائے گا۔ یہی نہیں بلکہ شہری اور
دیہی تقسیم کے ناسور کو ہمیشہ کے لیے دفن کریں گے۔ کیونکہ تجارتی سیاستدانوں کی جانب سے پھیلائے گئے اسی
ناسور نے کراچی اور سندھ کو ترقی سے دور رکھا ہوا ہے۔
پیر صاحب پگارا کا مشن ہے کہ شہری اور دیہی سندھ کے لوگوں کو متحد کیا جائے جس سے ایک بار پھر کراچی اور سندھ
میں راحت و سکون ہو اور معاشی خوش حالی آئے۔ پی این ٹی کے دورہ میں خواتین نے پی ایس 110 کی امیدوار کو
علاقے کے مسائل سے آگاہ کیا۔ انہوں نے خواتین کو یقین دہانی کرائی کہ وہ اقتدار میں آکر تمام مسائل سے نجات
دلانے کی کوشش کریں گی۔
بتول فاطمہ نے خواتین کو کہا اپنی زندگی میں تبدیلی کے لیے ووٹ کو سوچ سمجھ کے استعمال کرنا ہوگا ورنہ پھر اگلے
پانچ سال بھی عذاب بن کے گزریں گے۔ اگر زندگی میں بدلاؤ لانا ہے تو پی ایس 110 میں مجھے کامیاب کرائیں۔