جہیز میں 150 تولہ سونا، 15 ایکڑ زمین اور بی ایم ڈبلیو کا مطالبہ

بھارت میں جیہزکی بھڑتے ہوئے مطالبات لڑکیوں کی جانیں لینے لگے ہیں. ایک ایسا ہی واقعہ ریاست کیرالہ کے ترواننت
پورم میں پیش آیا جہاں 26 سالہ ڈاکٹر شاہانہ نے اس وقت خودکشی کر لی جب اس کے بوائے فرینڈ نے مطالبات پورے نہ
ہونے پر شادی سے انکار کر دیا.
بوائے فرینڈ نے جہیز میں 150 تولہ سونا، 15 ایکڑ زمین اور بی ایم ڈبلیو گاڑی کا مطالبہ کیا تھا. حکومت نے موت کی تحقیقات کا
حکم دے دیا ہے. ڈاکٹر شاہانہ گورنمنٹ میڈیکل کالج کے شعبہ سرجری میں پوسٹ گریجویٹ کورس کر رہی تھیں۔
پولیس نے بوائے فرینڈ کے خلاف خودکشی پر اکسانے اور جہیز کی روک تھام کے قوانین کے تحت مقدمہ درج کر لیا ہے۔ ملزم
کو حراست میں بھی لے لیا گیا.

مہنگائی نے دلہا دلہن کو بارات سمیت سیور پر پہنچا دیا

این ڈی ٹی وی کے مطابق ڈاکٹر شاہانہ اپنی والدہ اور دو بہن بھائیوں کے ساتھ رہتی تھیں۔ اس کے والد خلیجی ملک میں کام
کرتے تھے اور دو سال قبل انتقال کر گئے تھے۔
ڈاکٹر شاہانہ کی ڈاکٹر ای اے رویس سے دوستی ہوگئی اور دونوں نے شادی کا فیصلہ کیا۔ڈاکٹر شاہانہ کے اہل خانہ کاکہناہے ڈاکٹر
رویس کے اہل خانہ نے جہیز میں 150 سونا، 15 ایکڑ زمین اور بی ایم ڈبلیو کار کا مطالبہ کیا۔

مریدکے میں دلہا گرفتار، سہاگ رات پر والد کے ساتھ تھانہ میں قید

ڈاکٹر شاہانہ کے اہل خانہ مطالبہ پورا نہ کرپائے تو ڈاکٹر رویس کے خاندان نے شادی منسوخ کر دی. ڈاکٹر شاہانہ کے اپارٹمنٹ
نے خودکشی سے پہلے ایک تحریر چھوڑی جس پر لکھا تھا “ہر کوئی صرف پیسہ چاہتا ہے”.
بھارت میں روزانہ کئی لڑکیاں جہیز کے مطالبات پورے نہ کرنے کی وجہ سے موت کو گلے لگالیتی ہیں.