جھنگ کے کوٹ شاکر گرڈ اسٹیشن کے افتتاح کا معاملہ مزید طول پکڑ گیا

شیئر کریں:

جھنگ سے ابوتراب ترابی
جھنگ میں کمیشن وصولی کے الزامات اور کوٹ شاکر گرڈ اسٹیشن افتتاح کا معاملہ طول پکڑ گیا۔
وقت سے پہلے افتتاح کروانے پر کنسٹرکشن کمپنی اور فیسکو حکام آمنے سامنے آ گئے ہیں۔
ٹھیکیدار نے فیسکو حکام پر کمیشن لینے کا الزام لگا دیا اور بغیر اجازت افتتاح کروانے پر فیسکو کی
کنسٹرکشن کمپنی سے جواب طلب کر لیا گیا۔

جھنگ کی تحصیل اٹھارہ ہزاری کے علاقے کوٹ شاکر میں 132 کے وی گرڈ اسٹیشن کے افتتاح کے لیے
صوبائی اور وفاقی رکن اسمبلی کے درمیان جاری سرد جنگ کا معاملہ مزید طول پکڑ گیا۔

گرڈ اسٹیشن کا افتتاح موجودہ وزیر سیفران صاحبزادہ محبوب سلطان نے کرنا تھا تاہم گرڈ اسٹیشن کی
کنسٹرکشن کرنے والی متعلقہ کمپنی نے اس کا افتتاح 31 دسمبر کو کر دیا جس میں مقامی ایم پی اے
گروپ کے افراد نے شرکت کی۔


افتتاحی تقریب کی سوشل میڈیا پر ایم پی اے جبوآنہ گروپ کی جانب سے خوب تشہیر کی گئی۔
ذرائع کا کہنا ہے کہ 31دسمبر کو ہونے والی افتتاحی تقریب بارے رکن قومی اسمبلی کی جانب سے مبینہ
ناراضی پر فیسکو کے پراجیکٹ ڈائریکٹر نے کنسٹرکشن کمپنی کو خط لکھتے ہوئے جواب طلب کیا جس
پر کنسٹرکشن کمپنی کی جانب سے فیسکو کو بھیجے گئے تحریری جواب میں فیسکو حکام پر 3 فی صد
کمیشن بطور اپرول جبکہ ڈیڑھ فیصد بل پر لینے کا الزام عائد کیا گیا ہے۔

کنسٹرکشن کمپنی کی جانب سے جواب کی کاپی وفاقی وزیر پانی و بجلی سمیت دیگر متعلقہ
حکام بالا کو ارسال بھی کی گئی ہے۔
دوسری جانب ذرائع کا کہنا ہے کہ فیسکو کی جانب سے کنسٹرکشن کمپنی سے دس جنوری تک
جواب طلب کیا گیا تھا۔
ذرائع کا کہنا ہے کہ کمپنی کو بلیک لسٹ کرنے کے آپشن پر بھی غور کیا جا رہا ہے۔


شیئر کریں: