جنگ گروپ کے مالک میر شکیل الرحمن کی 240 دن بعد ضمانت منظور

شیئر کریں:

سپریم کورٹ نے جنگ اور جیو کے ایڈیٹر انچیف میر شکیل الرحمان کی ضمانت منظور کر لی۔
جسٹس مشیر عالم کی سربراہی میں جسٹس یحییٰ آفریدی اور جسٹس قاضی محمد امین احمد
پر مشتمل تین رکنی بینچ نے میر شکیل الرحمان درخواست ضمانت پر سماعت کی۔

میر شکیل الرحمن اراضی کیس کی تحقیقات مکمل

میر شکیل کے وکیل امجد پرویز ایڈووکیٹ نے عدالت میں دلائل دیے کہ میر شکیل الرحمان کو
الاٹ زمین سے قومی خزانےکو ایک دھیلےکا نقصان نہیں ہوا،
موجودہ ریفرنس 4 لوگوں کے خلاف دائر ہوا، لیکن درخواست گزارکے علاوہ کسی کو گرفتار نہیں کیا گیا،
میر شکیل الرحمان کو انکوائری کے وقت 12 مارچ کو گرفتار کیا گیا۔

میر شکیل الرحمان کے بارے میں حیرت انگیز انکشافات

جسٹس قاضی امین نے دریافت کیا کہ کیا نیب نے قومی خزانے کو نقصان کا کوئی سوال اٹھایا ؟
امجد پرویز نے بتایا کہ نیب نے ایک روپے کے نقصان کا سوال نہیں اٹھایا،
خریدی گئی زمین پر تعمیرات ایل ڈی اے کی منظوری کے بعد کی گئیں،
آج تک ان تعمیرات پرکوئی اعتراض نہیں اٹھایا گیا، 34 سال بعد ایک شہری کی درخواست پر یہ کیس دائر ہوا۔

میر شکیل الرحمن کیس : وزیراعظم نے کس میڈیا ہاؤس مالک سے رابطہ کیا

یاد رہے کہ 3 نومبر کو سپریم کورٹ کے دو رکنی بینچ نے میر شکیل الرحمان کی ضمانت
کی درخواست کی سماعت کی تاہم نیب پراسیکیوٹر نے دو رکنی بینچ پر اعتراض کرتے ہوئے
ججز کی تعداد بڑھانے کی درخواست کی جس پر عدالت نے تین رکنی بینچ کی تشکیل کے لیے
معاملہ چیف جسٹس آف پاکستان کو بھجواتے ہوئے درخواست ضمانت کی سماعت ایک ہفتہ کے لیے ملتوی کر دی تھی۔


شیئر کریں: