جرگے کے بعد ایک مہینہ سے بند بنوں میرانشاہ روڈ کھول دیا گیا

شیئر کریں:

وزیرستان کی بگڑی صورت حال اور امن کے لیے وفاقی حکومت کی جانب سے تشکیل دی گئی پارلیمانی
کمیٹی کے وفد کی اتمنزئی جرگے کے ساتھ مزاکرات کا پہلا دور نظامیہ عیدک کے مقام پر ہوا۔

پارلیمانی کمیٹی میں جمعیت علماءاسلام کے اکرم خان درانی ، عوامی نیشنل پارٹی کے میاں افتحار حسین،
پاکستان مسلم لیگ ن کے اختیار ولی، قومی وطن پارٹی کے سکندر شیرپاؤ ، نیشنل ڈیموکریٹک مومنٹ کے
عبداللہ ننگیال سمیت پاکستان پیپلزپارٹی ، پختونحواہ ملی عوامی پارٹی اور دیگر سیاسی و مذہبی جماعتوں
کے قائدین شامل ہیں۔

اتمنزئی جرگے نے وزیرستان میں پائیدار امن کو یقینی بنانے کیلئے اپنے مطالبات پارلیمانی کمیٹی کو پیش
کردیئے۔ پارلیمانی کمیٹی نے اتمنزئی جرگے کے مطالبات پر عملدرآمد کرنے اور ان کو اعلی حکام تک
پہنچانے کیلئے 15 دن کی مہلت مانگ لی۔ اتمنزئی جرگے نے بھی کشادہ دلی کے ساتھ انہیں 15 دن
کا وقت دے دیا ہے۔

مزاکرات کے بعد اتمنزئی جرگے نے بنوں میرانشاہ روڈ کو 15 دن کیلئے عارضی طورپر کھول دیا ہے۔
تاہم اتمنزئی جرگے نے پارلیمانی کمیٹی پر واضح کیا ہے کہ اگر اس مدت تک مطالبات تسلیم نہ کئے
گئے تو اتمنزئی قوم دوبارہ سڑکیں اور پولیو مہم بند کرنے پر مجبور ہو جائےگی۔ خیال رہے علاقے
کے عوام نے شمالی وزیرستان میں بڑھتی ہوئی دہشت گردی کے خلاف ایک مہینہ سے احتجاجا دھرنا
دیا ہوا تھا۔


شیئر کریں: