بیٹا باپ کو اور ماں بیٹے کو کرائے کے قاتلوں سے قتل کرانے لگے

شیئر کریں:

بیٹے کو قتل کرنے کے لیے باپ نے 5 لاکھ روپے میں ٹارگٹ کلر کی خدمت حاصل کیں۔
باپ نے اپنے ناخلف بیٹے کو راستے سے ہٹانے کے لیے ٹارگت کلرز کو سپاری دی۔

5 لاکھ روپے کی سپاری

65 سالہ انوارالحق اپنے بیٹے کی شکائتوں اور اس کی غلط حرکتوں سے ذہنی دباو کا شکار رہتا تھا۔
پولیس نے سپاری لینے والے پانچوں ٹارگت کلرز کو گرفتار کر کے سلاخوں کے پیچھے دھکیل دیا۔
بھارت کی ریاست بہار کے ضلع گوپال گنج کے گاؤں باغی شیخوپورہ میں یہ واقعہ پیش آیا۔
انوارالحق نے اپنے 45 سالہ بیٹے شفیق عالم کو غلط حرکتوں سے بارہا روکا لیکن وہ باز نہ آیا۔

انوارالحق نے گاؤں والوں کی شکائتوں سے تنگ آکر ٹارگٹ کلرز کی خدمات حاصل کیں اور بیٹے
کو قتل کرنے کے لیے انہیں پانچ لاکھ روپے بھی دیے۔

ٹارگٹ کلرز نے چند روز کی منصوبہ بندی کے بعد شفیق عالم کو موٹرسائیکل پر سنسان جگہ لے جاکے قتل کر دیا۔
پولیس نے واقعہ کی جگہ سے تیں گولیاں ملنے پر تحقیقات کی تھی ملزمان کو ہتھیار سمیت گرفتار کرلیا۔

کرائے کے قاتلوں کا استعمال بڑھ گیا

بھارت میں کرائے کے قاتلوں سے اپنے ہی خاندان کے افراد کو قتل کرنے کا رجحان بڑھنے لگا ہے۔
اس سے پہلے بھی گزشتہ سال ایک پٹھان خاندان میں اسی طرح کا واقعہ پیش آیا تھا۔

جہاں بیٹے نے ٹارگٹ کلرز سے اپنے باپ کو قتل کرایا تھا تعلیم پر توجہ نہ دینے پر روز روز کی نوکھ
جھونک پر بیٹے نے 15 ہزار روپے ایڈوانس دے کر باپ کا خون کرایا۔
ڈاکٹر چندرا شیکھر کی ریٹائرمنٹ کو چند روز ہی گزرے تھے کہ بیٹے نے انہیں دنیا ہی سے ریٹائر کر دیا۔

اسی طرح کا ایک اور واقعہ پٹنا ہی میں پیش آیا جس میں ماں نے اپنے بیٹے کو 40 ہزار روپے کرائے
کے قااتلوں کو دے کر قتل کروایا۔
ماں‌ محلہ والوں‌کی شکائتوں‌ سے پریشان ہو چکی تھی ناخلف بیٹا علاقے کی بہو بیٹیوں کو چھیڑتا
تھا اور روکنے کے باوجود وہ اپنی حرکتوں‌سے باز نہیں‌ آتا تھا۔


شیئر کریں: