بیلجیئم کے خانہ بندوش لاک ڈاؤن سے تنگ آ گئے

شیئر کریں:

بیلجیئم میں 3 مئی تک لاک ڈاؤن نافذ ہے گھروں میں بیٹھنا نہ تو عام شہریوں کو پسند ہے
اور نہ ہی خانہ بدوش ایک جگہ پر ٹھرانا پسند کرتے ہیں۔
خانہ بدوشوں کا کہنا ہے کہ انہیں ایسا محسوس ہو رہا ہے کہ ان کی آزادی چھین لی گئی ہے۔
بیلجیئم کی سیاحت کمیٹی کے مطابق زندگی اب ویسی نہیں رہی جیسی ہوا کرتی تھی۔
کورونا کی وبا پھیلنے سے سب کچھ اُلٹ ہوگیا ہے ہم وہ نہیں کر سکتے جو کرنے کے خواہش مند تھے۔
بیلجیئم میں کورونا کے 35 ہزار کیسز رپورٹ ہوئے مہلک مرض 5 ہزار افراد کی جانیں نگل چکا ہے۔


شیئر کریں: