بھارت میں اقلیتوں پرظلم، اقوام متحدہ کی تشویش

شیئر کریں:

اقوام متحدہ کے انسانی نسل کشی کی روک تھام کے مشیر نے بھی بھارت میں اقلیتوں سے
امتیازی سلوک پر تشویش ظاہر کر دی ہے ۔
انہوں نے بھارت پر زور دیا ہے کہ اقلیتوں سے متعلق عالمی قوانین کی پاسداری یقینی بنائی جائے۔
مشیر یو این سیکریٹری جنرل ایڈم ڈینگ کو بھارت میں مسلمانوں سمیت دیگر اقلیتوں کا تحفظ نہ ہونے پر تشویش ہے۔
بھارت میں اقلیتوں سے ناروا سلوک عالمی انسانی حقوق کی خلاف ورزی ہے۔
بھارت اقلیتوں کے تحفظ کے لیے اپنی ذمہ داری پوری کرے۔
بھارت میں نسل پرستی اور مذہبی منافرت کورنا سے زیادہ خطرناک

باالخصوص اسلام فوبیا سے متعلق کیسز بڑی تعداد میں سامنے آرہے ہیں۔
انہوں نے کہا کہ بھارتی رکن پارلیمنٹ سبرامنیم سوامی کا یہ کہنا انتہائی تشویش ناک ہے۔
مسلمان برابری والی کیٹگری میں نہیں آتے اور تمام انسان برابر نہیں۔
ہندوستان کا جنگی جنون خود بھارتی سلامتی کے لئے خطرہ

ایڈم ڈینگ کہتے ہیں کورونا وبا کے دوران بھارت میں اقلیتوں خصوصاً مسلمانوں کے خلاف حملے بڑھ گئے ہیں۔
ایسے وقت میں نفرت اور تقسیم کے پھیلاؤ کے بجائے اتحاد اور یکجہتی کا فروغ ضروری ہے۔
بھارت میں انتہا پسندوں کی جانب سے کورونا وائرس کو بھی مذہبی بنادیا گیا ہے۔
مسلمانوں کا سماجی اور معاشی بائی کاٹ کیا جارہا ہے، سر راہ پولیس کی موجودگی میں مسلمانوں پر تشدد
کیا جاتاہے اور انہیں جلا دیتے ہیں۔
بھارت کے اسپتالوں میں بھی خواتین غیرمحفوظ

اسی طرح شمال مشرقی ریاستوں کے شہریوں کو بھی کورونا یا چینی وائرس کے نام سے پکارا جانے لگا ہے۔
بھارت کے اندر سے بھی اس انتہا پسندی پر آوازیں اٹھنے شروع ہو گئی ہیں۔


شیئر کریں: